13

سپریم کورٹ نے آئی جی پنجاب کو پیش ہونے کا حکم دے دیا۔

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے مغوی لڑکی صوبیہ بتول کی عدم بازیابی پر پنجاب پولیس پر برہمی کا اظہار کیا۔

جسٹس مقبول باقر اور جسٹس قاضی محمد امین پر مشتمل سپریم کورٹ کے دو رکنی بینچ نے لڑکی صوبیہ بتول کے مبینہ اغوا کے الزام میں محمد عمیر کی جانب سے دائر درخواست ضمانت کی سماعت کی۔

دورانِ سماعت عدالت نے پولیس پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پولیس نے مغوی لڑکی کی بازیابی کے لیے کوئی ٹھوس قدم نہیں اٹھایا۔ جسٹس قاضی امین نے انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب کو حکم دیا کہ اگر مغوی لڑکی بازیاب نہ ہوسکی تو اگلی سماعت پر عدالت میں پیش ہوں۔

ایڈیشنل پراسیکیوٹر چوہدری جعفر نے کہا کہ پولیس کی بھرپور کوششوں کے باوجود بچی بازیاب نہیں ہو سکی۔ انہوں نے کہا کہ پولیس لڑکی اور ملزم کے کال ڈیٹا ریکارڈ کے ذریعے لڑکی کا سراغ لگانے میں ناکام رہی ہے۔ بنچ نے پولیس کو مغوی لڑکی کو بازیاب کرانے کی ہدایت کرتے ہوئے کیس کی سماعت ایک ماہ کے لیے ملتوی کر دی۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں