12

نواز نے جیل کی بجائے بیرون ملک لگژری لائف کو ترجیح دی، یاسمین

ملتان: وزیر صحت پنجاب ڈاکٹر یاسمین راشد نے بدھ کے روز کہا کہ عوام کو صحت کی بہتر سہولیات کی فراہمی کے لیے صوبے بھر کے بڑے ہسپتالوں کے لیے سالانہ 248 ارب روپے کا بجٹ مختص کیا جا رہا ہے۔

نشتر میڈیکل یونیورسٹی کے سنڈیکیٹ اجلاس کے بعد صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ 42 ارب روپے کا بجٹ صرف ادویات کی خریداری پر خرچ کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ نشتر فیز ٹو اور مدر اینڈ چائلڈ ہیلتھ ہسپتال جنوبی پنجاب کے عوام کے لیے حکومت کی ایک بڑی کوشش ہے۔ پنجاب میں 85 لاکھ افراد کو ہیلتھ کارڈ جاری کیے گئے ہیں۔ حکومت کو نادرا سے ہیلتھ کارڈز کے لیے 2 کروڑ سے زائد نام موصول ہوئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ آئندہ جنوری تک صوبے بھر کی اکثریتی آبادی کو ہیلتھ کارڈ جاری کر دیے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ 50,000 افراد مختلف ہسپتالوں سے ہیلتھ کارڈ پر علاج حاصل کر چکے ہیں۔ دنیا کی سب سے بڑی خسرہ اور روبیلا ویکسینیشن مہم کا آغاز کر دیا گیا ہے جس میں 90 ملین سے زائد بچوں کو ٹیکے لگائے جا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ نشتر میڈیکل یونیورسٹی کے 5.70 ارب روپے کے سالانہ بجٹ کی سنڈیکیٹ اجلاس میں منظوری دی گئی ہے جس سے لوگوں کو خدمات کی فراہمی میں بہتری آئے گی۔ ڈینگی پر قابو پانے کے لیے بھی اقدامات کیے گئے ہیں اور ڈینگی کے مریضوں کو ہر ممکن علاج فراہم کیا جا رہا ہے۔

ایک سوال کے جواب میں وفاقی وزیر نے کہا کہ نواز شریف کو پاکستان میں بہترین علاج کی پیشکش کی گئی۔ انہوں نے اس کے علاج پر اطمینان کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا کہ سیاسی مخالفت اور انسانیت الگ الگ ہیں، انہوں نے مزید کہا: “ہم نے سیاست کے بجائے انسانی پہلو کو ترجیح دی ہے۔ نواز شریف تین بار وزیراعظم رہ چکے ہیں۔ اسے پاکستان میں اپنے لوگوں کے ساتھ ہونا چاہیے تھا۔ جیل میں وقت گزارنے کے بجائے اس نے ملک سے باہر عیش و عشرت کی زندگی گزارنے کو ترجیح دی۔ اس نے کہا کہ ہر کوئی اپنے اعمال کا ذمہ دار ہے۔ جنوری میں صحافیوں کو ہیلتھ کارڈ بھی جاری کیے جائیں گے۔

قبل ازیں نشتر میڈیکل یونیورسٹی سنڈیکیٹ کا اجلاس ڈاکٹر یاسمین راشد کی زیر صدارت منعقد ہوا۔ ملاقات میں مختلف انتظامی امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ وزیر نے متعلقہ حکام کو بغیر کسی تاخیر کے طبی آلات کی مرمت کرنے کا حکم دیا۔ انہوں نے پنجاب کے سابق وزیر اور سنڈیکیٹ کے رکن خواجہ جلال الدین رومی سے مالی معاملات کے حل کے لیے فرینڈز آف نشتر کمیٹی کو فعال کرنے کی درخواست کی۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں