28

پاکستان کے ساتھ مضبوط اقتصادی تعلقات امریکی مفاد میں ہیں: بلوم

پاکستان میں امریکہ کے نامزد سفیر ڈونلڈ بلوم۔  فائل فوٹو
پاکستان میں امریکہ کے نامزد سفیر ڈونلڈ بلوم۔ فائل فوٹو

واشنگٹن: پاکستان کے لیے نامزد امریکی سفیر ڈونلڈ بلوم نے کہا ہے کہ پاک امریکا تعلقات غیر معمولی رہے ہیں۔

سینیٹ کمیٹی کو بریفنگ دیتے ہوئے ڈونلڈ بلوم نے کہا کہ اپنی جیو اکنامک پالیسی کے تحت امریکا پاکستان کے ساتھ اقتصادی اور تجارتی تعلقات کو بڑھانا چاہتا ہے۔ انہوں نے شفاف سرمایہ کاری کو فروغ دینے کے علاوہ پاکستان کی ڈیجیٹل معیشت اور املاک دانش کے تحفظ کے لیے کام کرنے کے عزم کا اظہار کیا۔

سفارت کار نے کہا کہ امریکہ پاکستان اور بھارت کے درمیان بہتر باہمی اور دوطرفہ تعلقات استوار کرنا چاہتا ہے، انہوں نے مزید کہا کہ ’’خطہ کسی اور تنازع کا متحمل نہیں ہوسکتا‘‘۔

ڈونلڈ بلوم نے تصدیق کی ہے کہ پاکستان اور امریکا القاعدہ، داعش اور تحریک طالبان پاکستان کے خلاف مشترکہ جنگ لڑیں گے۔ بلوم نے کہا کہ وہ پاکستان پر لشکر طیبہ اور جیش محمد کے خلاف کارروائی کے لیے دباؤ ڈالیں گے، انہوں نے مزید کہا کہ وہ پاکستان پر زور دیں گے کہ وہ دہشت گردوں کے خلاف بلا تفریق کارروائی کرے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان میں سفیر ہونے کے ناطے افغانستان سے امریکی شہریوں کا محفوظ انخلاء میری ترجیح ہو گی، انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان میں امریکی سفارتی مشن افغانستان میں مستحکم اور ہمہ گیر حکومت کے لیے کوشاں رہے گا۔ انہوں نے کہا کہ میں اس بات کو یقینی بناؤں گا کہ افغانستان شدت پسندوں کی محفوظ پناہ گاہ میں تبدیل نہ ہو۔

انہوں نے پاکستان میں انسانی حقوق کے تحفظ کے عزم کا بھی اظہار کیا، انہوں نے مزید کہا کہ اقلیتوں کے ساتھ روا رکھے جانے والے سلوک نے ملک کی شبیہ کو داغدار کیا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ اقلیتوں کے حقوق اور مذہبی آزادی کے تحفظ کے لیے بھی آواز اٹھائے گا۔ اس کے علاوہ پاکستان سے بھی کہا جائے گا کہ وہ انسانی حقوق کے کارکنوں اور صحافیوں کو ہراساں کرنے سے گریز کرے۔

کووڈ وبائی مرض پر قابو پانے کے لیے پاکستان کو امریکی امداد کے بارے میں بلوم نے کہا کہ امریکا نے پاکستان کو 100,000 ماسک اور 25,000 ذاتی حفاظتی آلات عطیہ کیے ہیں، اس کے علاوہ 27 ملین ویکسینیشن ڈوز اور 200 وینٹی لیٹرز بھی فراہم کیے ہیں۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں