25

کورونا، سردیوں کی بیماریاں الگ کیسے بتائیں؟

کورونا، سردیوں کی بیماریاں الگ کیسے بتائیں؟

لاہور: فلو، COVID-19، موسمی الرجی اور یہاں تک کہ عام زکام میں بھی بہت سی مماثلتیں ہیں۔ تاہم سانس لینے میں دشواری اور ذائقہ اور بو کے احساس میں کمی یا تبدیلی وبائی مرض کی بڑی علامات ہیں۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ تیز بخار COVID-19 کی ایک اہم علامت ہے۔ تاہم یہ علامت فلو اور زکام کے مریضوں میں بھی پائی جاتی ہے لیکن ایسے مریض شاذ و نادر ہی تیز بخار میں مبتلا ہوتے ہیں۔ موسمی الرجی بھی بعض اوقات بخار کو جنم دیتی ہے۔ ذائقہ اور بو کے احساس میں کمی یا تبدیلی وبائی مرض کی سب سے واضح اور بلند ترین علامات ہیں۔

یہ فلو، زکام اور الرجی کے مریضوں میں شاذ و نادر ہی پائے جاتے ہیں۔ خشک کھانسی COVID-19 اور فلو کے مریضوں میں بھی عام ہے لیکن اس کی علامت عام طور پر سردی اور الرجی میں نہیں پائی جاتی ہے۔ تھکاوٹ کا تعلق الرجی سے ہے لیکن عام طور پر COVID، فلو اور سردی میں نہیں ہوتا۔ کورونا اور فلو کے مریضوں کو چھینک نہیں آتی لیکن اس کی علامت سردی اور الرجی میں ہوسکتی ہے۔ فلو اور زکام کے مریض جسم میں درد کی شکایت کرتے ہیں لیکن یہ COVID اور الرجی کے مریضوں میں نہیں پایا جاتا۔

ناک بہنا سردی، فلو اور الرجی میں پایا جا سکتا ہے جبکہ یہ کورونا میں شاذ و نادر ہی دیکھا جاتا ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ نزلہ زکام میں گلے کی کھٹی عام ہے لیکن عام طور پر COVID اور فلو میں نہیں پائی جاتی۔ اسہال COVID میں شاذ و نادر ہی پایا جاتا ہے لیکن فلو والے بچوں میں دیکھا جا سکتا ہے۔ سردی اور الرجی میں یہ علامت ظاہر نہیں ہوتی۔ سر درد کووڈ اور الرجی میں شاذ و نادر ہی پایا جاتا ہے لیکن اکثر فلو میں دیکھا جا سکتا ہے۔ یہ سردی میں بھی موجود نہیں ہے۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں