26

پاک چین باڈی کا سی پیک، سرمایہ کاروں کے مسائل پر تبادلہ خیال

پاک چین باڈی کا سی پیک، سرمایہ کاروں کے مسائل پر تبادلہ خیال

اسلام آباد: پاک چین تعلقات کی اسٹیئرنگ کمیٹی (پی سی آر ایس سی) کا چوتھا اجلاس بدھ کو اسلام آباد میں ہوا، جس کی صدارت وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی، ترقی اور خصوصی اقدامات اسد عمر نے کی۔

ملاقات میں سی پیک کے تحت جاری منصوبوں اور سرمایہ کاروں کے مسائل پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔ سیکرٹری پاور ڈویژن نے کمیٹی کو پاور پراجیکٹس کی صورتحال پر بریفنگ دی۔ کمیٹی کو بتایا گیا کہ پانچ پاور پراجیکٹس کے لیے کمرشل آپریشن کی تاریخ (سی او ڈی) میں توسیع کا معاملہ حل ہو گیا ہے۔

گوادر کو بجلی کی فراہمی کے حوالے سے کمیٹی کو بتایا گیا کہ نیشنل گرڈ سے گوادر کو بجلی فراہم کرنے کے لیے ابتدائی 132 KV لائن تعمیر کی جا رہی ہے تاکہ اس کی بجلی کی ضروریات پوری ہو سکیں۔

کمیٹی کو بتایا گیا کہ اس کے علاوہ گوادر کے گھرانوں کو 3000 سولر پینل فراہم کیے جا رہے ہیں اور شہر کو بجلی کی اضافی فراہمی کو یقینی بنانے کے لیے دیگر قلیل مدتی اقدامات بھی کیے جا رہے ہیں۔

کمیٹی کو کے کے ایچ تھاکوٹ-رائی کوٹ سیکشن ری الائنمنٹ پراجیکٹ پر بھی بریفنگ دی گئی۔ وزارت مواصلات نے مطلع کیا ہے کہ ایک تکنیکی مشترکہ ورکنگ گروپ منصوبے کی فزیبلٹی اسٹڈی کی نگرانی کرے گا۔ اس کے علاوہ نیشنل انجینئرنگ سروسز آف پاکستان (نیسپاک) چین کے تعاون سے اس منصوبے کے لیے مشترکہ فزیبلٹی اسٹڈی کرے گی۔

پنجاب حکومت نے کمیٹی کو بتایا کہ اورنج لائن میٹرو ٹرین کے O&M کنٹریکٹر کی زیر التواء ادائیگیوں کی کافی رقم کلیئر کر دی گئی ہے اور باقی رقم ماہ کے اختتام سے پہلے ادا کر دی جائے گی۔

کمیٹی کو بتایا گیا کہ اسلام آباد ہائی کورٹ (IHC) کے حکم امتناعی کی وجہ سے سی پیک کے ایک اور منصوبے کوئٹہ ژوب روڈ منصوبے کے کچھ حصوں پر کام روک دیا گیا تھا۔

اس کے علاوہ صنعتی تعاون سے متعلق امور پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔ محکمہ صنعت پنجاب نے کمیٹی کو سرمایہ کاروں کے زیر التوا مسائل کے حل کے لیے کیے گئے اقدامات سے آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ فیڈمک کے سی ای او کی تقرری کا عمل جلد مکمل کر لیا جائے گا۔ اس نے کہا کہ کمپنی کے بورڈ کی تشکیل نو کی جا چکی ہے۔

وزارت داخلہ نے کمیٹی کو نئے ویزا نظام اور سرمایہ کاروں کی سہولت کے لیے کیے جانے والے اقدامات سے آگاہ کیا۔ چیئر نے وزارت داخلہ کو ہدایت کی کہ وہ پاکستان میں کام کرنے والی چینی کمپنیوں کے ساتھ رابطہ کریں اگر انہیں اب بھی کوئی مسئلہ درپیش ہے۔

چیئرمین نے تمام وزارتوں اور محکموں کی جانب سے زیر التوا مسائل کے حل کے لیے کی گئی پیش رفت پر اطمینان کا اظہار کیا۔ وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے سی پیک امور خالد منصور، ڈپٹی چیئرمین پلاننگ کمیشن محمد جہانزیب خان، سیکرٹری پلاننگ، سیکرٹری پاور ڈویژن، صوبوں کے چیف سیکرٹریز اور وزارتوں/ڈویژنوں کے دیگر سینئر افسران نے اجلاس میں شرکت کی۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں