10

کے ایم سی سوسائٹی کو گٹر باغیچہ کی 200 ایکڑ زمین کی الاٹمنٹ غیر قانونی: سپریم کورٹ

کے ایم سی سوسائٹی کو گٹر باغیچہ کی 200 ایکڑ زمین کی الاٹمنٹ غیر قانونی: سپریم کورٹ

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے منگل کے روز کراچی میٹروپولیٹن کارپوریشن (کے ایم سی) ایمپلائز کوآپریٹو ہاؤسنگ سوسائٹی کو گٹر باغیچہ کی 200 ایکڑ اراضی کی الاٹمنٹ کو غیر قانونی قرار دیتے ہوئے تجاوزات والے پلاٹوں کو فوری خالی کرانے کا حکم دے دیا۔

عدالت نے کے ایم سی انتظامیہ کو پلاٹوں کو فوری خالی کرانے کی ہدایت کردی۔ چیف جسٹس نے کہا کہ قانون کے مطابق زمین صرف تعلیمی، مذہبی اور فلاحی مقاصد کے لیے دی جا سکتی ہے۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ کے ایم سی نے گٹر باغیچہ کی 200 ایکڑ اراضی کا 80 فیصد اپنے ملازمین کو الاٹ کیا ہے۔

تاہم کے ایم سی کے وکیل نے استدعا کی کہ سوسائٹی میں 300,000 سے زیادہ لوگ رہ رہے ہیں اور عدالت سے درخواست کی کہ وہ بیواؤں اور ان کے بچوں کے بارے میں بھی سوچے۔ ان کا کہنا تھا کہ پنشن ان کے لیے گھر بنانے کے لیے کافی نہیں ہے۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ کے ایم سی اپنے ملازمین کو براہ راست یا بالواسطہ زمین الاٹ نہیں کر سکتی۔ عدالت نے اراضی کی الاٹمنٹ منسوخ کرتے ہوئے کراچی کے ایڈمنسٹریٹر کو فوری طور پر تجاوزات کو خالی کرانے کا حکم دے دیا۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں