11

کراچی میں کوویڈ 19 کی مثبتیت کا تناسب 31 فیصد تک پہنچ گیا۔

Omicron ویریئنٹ نے کراچی میں ڈیلٹا ویریئنٹ کو تقریباً مکمل طور پر بدل دیا ہے۔  -اے پی پی
Omicron ویریئنٹ نے کراچی میں ڈیلٹا ویریئنٹ کو تقریباً مکمل طور پر بدل دیا ہے۔ -اے پی پی

کراچی: جمعرات کو کراچی میں COVID-19 کی مثبتیت کا تناسب 31 فیصد تک پہنچ گیا جب 1,940 افراد میں متعدی بیماری کا مثبت تجربہ کیا گیا، ایک سرکاری رپورٹ کے مطابق شہر میں مزید دو افراد کی موت ہو گئی۔

سندھ ہیلتھ کے ایک عہدیدار نے کہا کہ “کراچی میں 1,940 افراد میں کوویڈ 19 کے ٹیسٹ مثبت آئے ہیں جب شہر میں 6,259 ٹیسٹ کیے گئے تھے، جس کا مطلب ہے کہ شہر میں لگ بھگ 31 فیصد لوگ متعدی بیماری کے لیے مثبت پائے گئے تھے۔” محکمہ نے 13 جنوری 2022 کو COVID-19 کی روزانہ کی صورتحال کی رپورٹ کا حوالہ دیتے ہوئے کہا۔

تاہم، اہلکار نے دعویٰ کیا کہ چونکہ کراچی میں ہسپتالوں میں داخل ہونے کی تعداد میں اضافہ نہیں ہو رہا ہے، اومیکرون ویریئنٹ کی وجہ سے COVID-19 کے پھیلاؤ کو کنٹرول کرنے کے لیے کوئی سخت اقدامات زیر غور نہیں ہیں، جس نے ڈیلٹا ویریئنٹ کو تقریباً مکمل طور پر تبدیل کر دیا ہے۔

“ہم نے فیصلہ کیا ہے کہ جب تک کراچی میں اسپتالوں میں 40-50 فیصد تک اضافہ نہیں ہوتا، ہم کوئی سخت اقدام نہیں اٹھائیں گے۔ ہم ویکسینیشن کو فروغ دینے کے لیے کچھ اقدامات کر رہے ہیں اور ایسے کاروبار کرنے والوں کے خلاف کارروائی کر رہے ہیں جو بغیر ٹیکے نہ لگوانے والے عملے کے ساتھ سرعام لین دین کرتے ہیں لیکن کراچی میں اس وقت کوئی سخت اقدامات زیر غور نہیں ہیں،” سندھ اسمبلی میں پارلیمانی سیکریٹری صحت، ایم پی اے قاسم سومرو نے جمعرات کو دی نیوز کو بتایا۔ .

یہ دعویٰ کرتے ہوئے کہ کوویڈ 19 کے مریضوں کے لیے صحت کی زیادہ تر سہولیات تقریباً خالی پڑی ہیں، ایم پی اے قاسم سومرو نے کہا کہ جمعرات کو سندھ کے وزیر صحت نے این سی او سی حکام کے ساتھ ایک تفصیلی میٹنگ کی اور فیصلہ کیا گیا کہ ملک لاک ڈاؤن جیسے اقدامات کا متحمل نہیں ہو سکتا اور عوام خود کو بچانے کے لیے احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کو کہا جائے۔

دوسری جانب وزیراعلیٰ سندھ نے اپنی روزانہ کی کووڈ-19 کی صورتحال کی رپورٹ میں بتایا کہ سندھ میں راتوں رات کوویڈ 19 کے مزید دو مریض انتقال کرگئے، جس سے ہلاکتوں کی تعداد 7 ہزار 693 ہوگئی جب کہ 2 ہزار 289 نئے کیسز سامنے آئے جب 12 ہزار 229 ٹیسٹ کیے گئے۔ صوبہ

مراد نے کہا کہ 12,229 نمونوں کی جانچ کی گئی جس میں 2,289 کیسز کا پتہ چلا جو 18.7 فیصد موجودہ پتہ لگانے کی شرح ہے اور مزید کہا کہ اب تک 7,307,649 ٹیسٹ کیے گئے ہیں جن میں سے 492,574 کیسز کی تشخیص ہوئی ہے جن میں سے 95.3 فیصد یا 469,506 مریض راتوں رات صحت یاب ہوئے ہیں۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں