22

آئین کے تحت قائد کی ہدایت پر فوج، عدلیہ اور الیکشن کمیشن کو سیاست میں غیر جانبدار رہنا ہوگا، وسیم سجاد

اسلام آباد: آئینی ماہر اور سینیٹ کے سابق چیئرمین وسیم سجاد نے پیر کو کہا کہ عدلیہ، الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) اور فوج کو سیاست میں غیر جانبدار رہنا چاہیے۔

وہ جیو نیوز کے پروگرام کیپٹل ٹاک کے میزبان حامد میر نے آئین کے آرٹیکل 244 کے تحت سروس جوائن کرنے کے وقت فوجی جوانوں سے لیا جانے والا حلف پڑھ کر سنایا تو ان خیالات کا اظہار کر رہے تھے۔

اللہ کے نام حلف کا متن یہ ہے: “میں، —– پختہ طور پر قسم کھاتا ہوں کہ میں پاکستان کے ساتھ سچا ایمان اور وفاداری کروں گا اور اسلامی جمہوریہ پاکستان کے آئین کو برقرار رکھوں گا جو عوام کی مرضی کو مجسم کرتا ہے، کہ میں اپنے آپ کو کسی بھی طرح کی سیاسی سرگرمیوں میں ملوث نہیں کروں گا اور یہ کہ میں پاکستان آرمی (یا بحریہ یا فضائیہ) میں قانون کے تحت اور ضرورت کے مطابق ایمانداری اور دیانتداری سے پاکستان کی خدمت کروں گا۔ اللہ تعالیٰ میری مدد اور رہنمائی فرمائے (آمین)۔

وسیم سجاد نے کہا کہ فوج کا سیاست میں دخل اندازی نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ آئین اور قائداعظم کی ہدایات کے تحت فوج کا فرض ہے کہ وہ ملک کا دفاع کرے اور سیاست سے دور رہے۔

وسیم سجاد نے کہا کہ لفظ “غیر جانبدار” کے استعمال سے ابہام پیدا ہوا ہے، ان کا کہنا تھا کہ اس کے معنی سیاق و سباق میں سمجھے جائیں۔

انہوں نے کہا کہ بعض اداروں یعنی عدلیہ، الیکشن کمیشن آف پاکستان اور فوج سے توقع کی جاتی ہے کہ وہ ملکی سیاست میں غیر جانبدار رہیں گے۔

انہوں نے کہا کہ فوج پاکستان اور اس کے آئین کے لیے کھڑی رہے گی لیکن سیاست میں مداخلت نہیں کرے گی۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں