18

عثمان مرزا سمیت 4 افراد کو عمر قید کی سزا سنائی گئی۔

جوڑے کو ہراساں کرنے کا مقدمہ: عثمان مرزا سمیت 4 افراد کو عمر قید کی سزا

اسلام آباد: اسلام آباد کی ایڈیشنل سیشن عدالت نے جوڑے کو ہراساں کرنے کے مقدمے میں پانچ ملزمان کو جمعہ کو عمر قید کی سزا سنادی۔

ایڈیشنل سیشن جج عطا ربانی نے مرکزی ملزم عثمان مرزا اور دیگر چار کو عمر قید کی سزا سنائی اور دو ساتھیوں کو بری کر دیا۔ سماعت کے دوران مرزا سمیت تمام ملزمان کو عدالت میں پیش کیا گیا۔

سیشن جج نے ایک ملزم فرحان شاہین سے سوال کیا کہ کیا وہ واقعہ کے وقت وہاں موجود تھا؟ اس پر شاہین نے نفی میں جواب دیتے ہوئے کہا کہ میں بے قصور ہوں کیونکہ میں جائے وقوعہ پر موجود نہیں تھا۔ سماعت کے بعد فاضل جج نے عثمان مرزا، حافظ عطا الرحمان، اداس قیوم بٹ، فرحان شاہین اور محب بنگش کو عمر قید کی سزا سنائی، جبکہ عمر بلال اور ریحان حسن مغل کو بری کر دیا گیا۔

گزشتہ سال جولائی میں سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو منظر عام پر آئی تھی جس میں کیس کے مرکزی ملزم مرزا کو دوسرے مردوں سے بھرے کمرے میں ایک نوجوان جوڑے کو پرتشدد طریقے سے مارتے اور ہراساں کرتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے۔ ویڈیو وائرل ہونے کے چند گھنٹوں کے اندر، اسلام آباد پولیس نے مرزا کو حراست میں لے لیا اور مقدمے میں فرسٹ انفارمیشن رپورٹ (ایف آئی آر) درج کر لی۔ بعد ازاں اسلام آباد جوڑے کو ہراساں کرنے کے کیس میں عثمان مرزا سمیت 7 افراد پر فرد جرم عائد کردی گئی۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں