16

پارٹی میں کوئی دراڑ نہیں، شجاعت حسین

پارٹی میں کوئی دراڑ نہیں، شجاعت حسین

اسلام آباد: پارٹی کے پی ٹی آئی کا ساتھ دینے کے اعلان کے بعد پی ایم ایل کیو کے رہنماؤں کے درمیان اختلافات کی افواہوں کے درمیان، پارٹی کے صدر چوہدری شجاعت حسین نے منگل کو واضح کیا کہ ان کا خاندان اور پارٹی “ایک پیج” پر ہیں۔

پارٹی کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان کے مطابق شجاعت نے کہا کہ تمام سیاسی فیصلے ان کی مشاورت سے کیے گئے تھے اور انہیں ان کی مکمل حمایت حاصل تھی۔

پیر کے روز، پارٹی کے ایک رہنما کے وفاقی وزیر کے عہدے سے استعفیٰ دینے کے بعد وزیر اعظم عمران خان کے خلاف تحریک عدم اعتماد کے خلاف پارٹی کی حمایت پر پی ایم ایل کیو رہنماؤں کے درمیان اختلافات کی اطلاعات سامنے آئیں۔

تمام خبروں کو مسترد کرتے ہوئے شجاعت نے کہا: “جو افواہیں گردش کر رہی ہیں وہ جھوٹی ہیں۔ پارٹی یا گھر میں تمام فیصلے میری مشاورت اور رضامندی کے بعد کیے جاتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ “میں وضاحت پر یقین نہیں رکھتا،” انہوں نے مزید کہا کہ موجودہ اسمبلی میں نوجوان ایم این ایز کی تعداد پچھلی حکومت کے دوروں کے مقابلے زیادہ ہے اس لیے نوجوانوں پر الزام لگانا اور شک کرنا غلط ہے۔ پی ایم ایل کیو کے سربراہ نے کہا کہ “پیسے کا استعمال” کی اصطلاح غلط ہے اور اسے استعمال نہیں کیا جانا چاہیے کیونکہ پڑھے لکھے لوگ اس طرح کی گفتگو کو پسند نہیں کرتے۔

انہوں نے اس بات کا اعادہ کیا کہ پروپیگنڈہ کرنا یا حقائق سے کھلواڑ کرنا نامناسب ہے۔ انہوں نے زور دے کر کہا کہ جو لوگ اختلافات کا پرچار کرکے سیاسی فائدہ حاصل کرنا چاہتے ہیں انہیں مایوسی ہوگی۔

شجاعت نے مزید بتایا کہ انہیں بتایا گیا کہ ان کے خاندان میں اختلافات ہیں۔ تاہم، “اس میں کوئی حقیقت نہیں ہے۔”

“ہمارا خاندان گزشتہ 50 سالوں سے نہ صرف پنجاب بلکہ پورے پاکستان میں سیاست میں ہے،” انہوں نے کہا کہ تمام فیصلے ان کی مشاورت سے کیے جاتے ہیں۔

اطلاعات کے مطابق چوہدری خاندان نے تنازع کے بعد پیر کو رات گئے تک ملاقاتیں کیں۔ طارق بحر چیمہ نے کہا تھا کہ پارٹی صدر کی منظوری سے استعفیٰ دیا اور تحریک عدم اعتماد میں عمران خان کے حق میں ووٹ نہیں دیں گے۔

قومی اسمبلی کی کل پانچ نشستوں میں سے تین جن میں خاندان کی تین نشستیں ہیں، مسلم لیگ (ق) کے چار ایم این ایز پی ٹی آئی کی حمایت کرنے پر مائل ہیں جبکہ چیمہ اپوزیشن کو سپورٹ کرنا چاہتے ہیں۔

ادھر مقامی میڈیا کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے اسلام آباد میں چوہدری پرویز الٰہی اور مونس الٰہی سمیت پی ایم ایل کیو کی قیادت سے ملاقات کی۔

تفصیلات کے مطابق اجلاس میں شریک تمام افراد نے ملک کی موجودہ سیاسی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا۔ وزیراعظم اور چوہدریوں نے وزیراعظم کے خلاف قومی اسمبلی میں تحریک عدم اعتماد کی فائلوں پر بھی بات کی۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں