14

بلاول نے وزیراعظم سے خط قوم کے سامنے لانے کا کہا

اسلام آباد: پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے منگل کو وزیر اعظم عمران خان کو قوم کے سامنے “خط” لانے کی ہمت کی۔

پریس کانفرنس کرتے ہوئے بلاول نے کہا کہ پاکستانی عوام جان چکے ہیں کہ جھوٹے الزامات لگانا عمران خان کی عادت ہے۔ اسلام آباد میں الگ الگ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے منگل کو حکومت سے کہا کہ وہ خط پارلیمنٹ میں پیش کرے۔

پی ایم ایل این کے رہنما نے حیرانگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا، “عمران خان کی طرف سے لہرایا گیا خط عدم اعتماد کی قرارداد کے وقت کیوں آیا؟” عباسی نے وزیر اعظم سے مطالبہ کیا کہ وہ قومی اسمبلی کے ان کیمرہ اجلاس میں دھمکی آمیز خط پیش کریں۔

ایک سوال کے جواب میں پی ایم ایل این کے رہنما نے کہا کہ وہ نہیں جانتے کہ عمران خان جس خط کے بارے میں بات کر رہے ہیں، وہ ملک کی عسکری قیادت کے ساتھ شیئر کیا گیا تھا یا نہیں۔ انہوں نے کہا کہ اگر ایسا ہے تو خط کو قومی سلامتی کمیٹی کے ہنگامی اجلاس میں لایا جانا چاہیے لیکن انہوں نے مزید کہا کہ اس معاملے پر پارلیمنٹ کو اعتماد میں لیا جانا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ اگر وزیراعظم عمران خان سچ بول رہے ہیں تو پارلیمنٹ اگلے 6 دن تک ان کے ساتھ ہوگی۔ اگر دعوے جھوٹے ہیں تو انہیں قومی اسمبلی کے فلور پر معافی مانگنی چاہیے۔

سابق وزیراعظم نے پی ٹی آئی کی قیادت والی حکومت سے کہا کہ وہ فوری طور پر اس ملک سے سفارتی تعلقات منقطع کرے جہاں سے یہ خط بھیجا گیا تھا اور اس کے سفیر کو فوری طور پر ملک بدر کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کی 75 سالہ تاریخ میں ایسا کبھی نہیں ہوا کہ 23 ​​کروڑ عوام کے وزیراعظم کو دھمکی آمیز خط لکھا گیا ہو۔ انہوں نے سوال کیا کہ اگر وزیراعظم اور ان کے دو وزراء خط دیکھ سکتے ہیں تو چیف جسٹس آف پاکستان اور پارلیمنٹ کو کیوں نہیں دکھایا جا سکتا۔ انہوں نے کہا کہ ‘یہ صرف حکومت کو ہی نہیں بلکہ ہم سب کو اس خط کا سخت جواب دینا ہو گا۔’

عباسی نے عمران خان کو متنبہ کیا کہ اگر یہ خط پارلیمنٹ کے سامنے پیش نہ کیا گیا تو اسے 4 اپریل کے بعد منظر عام پر لایا جائے گا اور سب دیکھیں گے کہ کس ملک نے پاکستان کے وزیراعظم کو دھمکیاں دینے کی جرات کی۔ عباسی نے کہا کہ جن دو وزراء نے نواز شریف پر الزامات لگائے، یہ کہتے ہوئے کہ وہ خط کے پیچھے ہیں، انہیں اپنے دعوؤں کے حق میں ثبوت پیش کرنے کے لیے عدالت جانا پڑے گا۔ انہوں نے کہا کہ وزراء نے اس وزیر اعظم پر الزامات لگائے ہیں جس نے دنیا بھر کے زبردست دباؤ کے باوجود ایٹمی تجربات کئے۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں