18

ٹانک، ایس وزیرستان میں 8 فوجی شہید، 7 دہشت گرد مارے گئے۔

ٹانک، ایس وزیرستان میں 8 فوجی شہید، 7 دہشت گرد مارے گئے۔

راولپنڈی: پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) نے بتایا کہ خیبر پختونخوا کے ٹانک اور جنوبی وزیرستان کے اضلاع میں دہشت گردوں کے ساتھ دو مسلح جھڑپوں میں ایک نوجوان افسر، دو جونیئر کمیشنڈ آفیسرز (جے سی اوز) اور پاک فوج کے پانچ جوان شہید ہوگئے۔ بدھ.

جنوبی وزیرستان کے علاقے مکین میں بھی سیکیورٹی فورسز نے فائرنگ کے تبادلے میں 7 دہشت گردوں کو ہلاک کردیا۔ فوجیوں نے بھرپور جواب دیا اور چار دہشت گردوں کو ہلاک کر دیا۔ تاہم فائرنگ کے شدید تبادلے کے دوران راولپنڈی کے رہائشی 25 سالہ کیپٹن سعد بن عامر اور ٹانک کے رہائشی 37 سالہ لانس نائیک ریاض نے بہادری سے مقابلہ کیا اور جام شہادت نوش کیا۔

ایک اور واقعے میں تین دہشت گردوں نے ٹانک میں ملٹری کمپاؤنڈ میں داخل ہونے کی کوشش کی۔ پاکستانی فوجیوں نے موثر جواب دیتے ہوئے تینوں دہشت گردوں کو گھیرے میں لے کر ہلاک کر دیا۔ تاہم فائرنگ کے شدید تبادلے کے دوران چھ فوجیوں نے بہادری سے لڑتے ہوئے شہادت کو گلے لگا لیا۔

شہید ہونے والوں میں نوشہرو فیروز کے رہائشی 48 سالہ صوبیدار میجر شیر محمد، خیرپور کے رہائشی 39 سالہ نائب صوبیدار زبید، 39 سالہ حوالدار سہیل، راولپنڈی، 36 سالہ لانس نائیک غلام آل، ٹنڈو الہ یار کا رہائشی، سپاہی علی، سپاہی شامل ہیں۔ خیرپور کا رہائشی 32 سالہ اور سکھر کا رہائشی 37 سالہ سپاہی میر محمد۔

آئی ایس پی آر نے کہا کہ پاک فوج دہشت گردی کے خاتمے کے لیے پرعزم ہے، اور بہادر فوجیوں کی ایسی قربانیاں ان کے عزم کو مزید مضبوط کرتی ہیں۔ اے ایف پی کے مطابق تحریک طالبان پاکستان نے ٹینک حملے کی ذمہ داری قبول کر لی ہے۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں