17

باپ بیٹے نے کئی ملکوں میں حکومت کی۔

کراچی۔ ایک باپ اور اس کا بیٹا دنیا کے درجنوں ممالک میں سربراہ مملکت یا حکومت رہے۔ دو بھائیوں نے کئی ممالک میں حکومت کی جبکہ ایک ملک میں ایک باپ، اس کا بیٹا اور پوتا وزیراعظم بنے۔ کئی حکمرانوں کی بیٹیوں نے بھی ملک کی قیادت کی۔ امریکی تاریخ میں دو ایسے واقعات ہیں جب ایک شخص اور اس کا بیٹا ملک کے صدر بنے۔

ایک باپ اور اس کے بیٹے نے سات افریقی ممالک میں حکومت کی، جب کہ دو بھائیوں نے بھی ایک ملک کی قیادت کی۔ بنگلہ دیش میں شیخ مجیب الرحمان اور ان کی بیٹی شیخ حسینہ واجد وزیراعظم بنیں۔ ضیاء الرحمن بنگلہ دیش کے صدر تھے اور ان کی اہلیہ خالدہ ضیاء بھی ملک کی وزیر اعظم تھیں۔

پاکستان میں ایک نادر واقعہ پیش آیا، جب ذوالفقار علی بھٹو اور ان کی بیٹی بے نظیر بھٹو ملک کے وزیر اعظم بنے، جب کہ بے نظیر بھٹو کے شوہر آصف علی زرداری پاکستان کے صدر بنے۔

بیلجیم میں، گیسٹن آئسکنز اور ان کے بیٹے ماریک آئسکنز نے بطور وزیر اعظم خدمات انجام دیں۔ بھوٹان کے وزیر اعظم سر راجہ سونم ٹوپگے دورجی کے دو بیٹے وزیر اعظم رہے۔ جاپان میں فوکوڈا خاندان کے باپ بیٹے وزیراعظم تھے۔ اردن میں والد سمیر زید الرفاعی، بیٹا زید الرفاعی اور پوتا سمیر الریفائی وزیر اعظم تھے۔ اردن میں بھائی مدر محمد عیاش بدران اور عدنان محمد عیاش بدران وزیراعظم تھے۔ لبنان میں حریری خاندان کے باپ بیٹے وزیراعظم تھے۔ ملائیشیا میں رزاق خاندان کے ایک باپ بیٹا وزیراعظم رہے۔ ملائیشیا میں دو بھائیوں نے بطور وزیراعظم خدمات انجام دیں۔ مالٹا میں ایک باپ صدر اور بیٹا وزیراعظم بن گیا۔ نیپال میں دو بھائی وزیراعظم بنے، باپ اور بیٹا سنگاپور میں وزیراعظم رہے اور ایران میں سسر محمد مصدق اور داماد احمد متین بالترتیب وزیراعظم رہے اور باپ بیٹا علی خان منصور اور حسن علی منصور بالترتیب وزیراعظم رہے۔ وزرائے اعظم تھے۔ جمیکا میں والد نارمن واشنگٹن مینلی اور بیٹا مائیکل مینلی وزیراعظم تھے۔ افریقہ کے سات ممالک میں باپ بیٹے کی حکومت تھی اور ایک ملک میں بھائی بھی اعلیٰ عہدے پر فائز تھے۔ جن ممالک میں باپ بیٹے کی قیادت تھی ان میں بوٹسوانا، کینیا، کانگو، گبن، ٹوگو، ماریشس اور ملاوی شامل تھے۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں