10

پنجاب کے شہروں میں عید Covid-19 پابندیوں کے بغیر منائی گئی۔

بہاولپور: یہاں عیدالفطر مذہبی جوش و جذبے سے منائی گئی۔ بہاولپور اور بہاولنگر اضلاع میں 780 عیدگاہوں، مساجد، امام بارگاہوں اور کھلے مقامات پر نماز عید ادا کی گئی جس میں متعلقہ ضلعی پولیس محکموں کی جانب سے سخت حفاظتی اقدامات کیے گئے تھے۔ ضلع بہاولپور میں 1500 سے زائد پولیس اہلکار اور افسران تعینات کیے گئے تھے اور ضلع بہاولنگر میں عید گاہوں، مساجد، امام بارگاہوں اور کھلے مقامات کی سیکیورٹی کے لیے 1250 سے زائد پولیس اہلکار اور افسران تعینات کیے گئے تھے۔

بہاولپور میں عید کا سب سے بڑا اجتماع مرکزی عیدگاہ میلاد چوک میں ہوا۔ ضلع بہاولنگر میں عید کا مرکزی اجتماع مرکزی عیدگاہ میں ہوا۔ اوچ شریف، احمد پور ایسٹ، یزمان، خیرپور ٹامیوالی، حاصل پور، ہارون آباد، فقیروالی، چشتیاں، منچن آباد، فورٹ عباس اور علاقے کے دیگر چھوٹے بڑے شہروں میں بھی عید کے اجتماعات پرامن ماحول میں ہوئے۔

فیصل آباد: ضلع بھر میں لوگوں نے عیدالفطر مذہبی جوش و جذبے سے منائی۔ ضلعی انتظامیہ نے کسی بھی ناخوشگوار واقعے سے بچنے کے لیے جامع انتظامی اور حفاظتی انتظامات کیے تھے۔ نماز عید کے بعد ڈپٹی کمشنر علی شہزاد نے اولڈ ایج ہوم کا دورہ کیا اور بزرگ شہریوں سے ملاقات کی۔ انہوں نے انہیں عید کی مبارکباد اور تحائف پیش کیے۔ اس موقع پر اے سی عمر مقبول اور صاحبزادہ محمد یوسف، انچارج رابعہ خالد اور دیگر بھی موجود تھے۔ ڈپٹی کمشنر نے معمر افراد کی صحت کے بارے میں دریافت کیا۔ انہوں نے ان سے فراہم کی جانے والی سہولیات کے بارے میں بھی پوچھا۔ انہوں نے نوجوان نسل سے اپیل کی کہ وہ اپنے والدین کا احترام کریں اور انہیں ان کے حقوق دیں تاکہ وہ ان مراکز میں نہ آ سکیں۔ بعد ازاں ڈپٹی کمشنر دارالامان گئے اور قیدی خواتین کو عید کا تحفہ دیا۔ انہوں نے خواتین کے لیے سنٹر میں دستیاب سہولیات کا بھی جائزہ لیا۔

قبل ازیں ڈپٹی کمشنر علی شہزاد نے فیصل آباد انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی کے مختلف وارڈز کا دورہ کیا اور مریضوں کو عید کے تحائف پیش کیے جن کا اہتمام ہارٹ سیور فاؤنڈیشن نے کیا تھا۔

ڈپٹی کمشنر نے کینال روڈ پر واقع ایس او ایس گاؤں کا بھی دورہ کیا اور بچوں سے ملاقات کی اور ان سے کہا کہ وہ اپنی تعلیم پر توجہ دیں۔ انہوں نے ایس او ایس ولیج میں بچوں کے لیے دستیاب سہولیات کا بھی جائزہ لیا۔

للموسا: عیدالفطر دو سال کے وقفے کے بعد بغیر کسی COVID-19 پابندیوں کے مذہبی جوش و خروش، جوش و خروش کے ساتھ منائی گئی۔

سب سے بڑا اجتماع مرکزی عیدگاہ میں ہوا۔ مرکزی عیدگاہ میں سیاست دانوں سمیت زندگی کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والے افراد نے نماز عید ادا کی۔ مسلمانوں کے اتحاد اور بھارت کے ناجائز مقبوضہ جموں و کشمیر اور فلسطین کی آزادی کے لیے دعائیں کی گئیں۔ اس موقع پر مادر وطن کی سلامتی اور خوشحالی کے لیے دعائیں بھی کی گئیں۔ علمائے کرام نے اپنے خطبات میں عیدالفطر کے فلسفہ اور اہمیت پر روشنی ڈالی۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں