22

گجرات میں دو ہسپانوی پاکستانی بہنوں کو گولی مار کر قتل کر دیا گیا۔

گوجرانوالہ: ہفتہ کے روز گجرات میں دو ہسپانوی پاکستانی بہنوں کو فائرنگ کر کے قتل کر دیا گیا۔ پولیس نے لڑکی کے بھائی اور چچا سمیت 9 افراد کے خلاف مقدمہ درج کر لیا ہے۔ آئی جی پنجاب نے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے آر پی او گوجرانوالہ سے رپورٹ طلب کر لی ہے۔

24 سالہ انیسہ عباس اور 20 سالہ عروج عباس کی شادی اپنے کزن سے ہوئی تھی لیکن وہ کچھ اور لوگوں سے شادی کرنا چاہتے تھے۔ انہوں نے اپنے شوہروں سے طلاق کا مطالبہ کیا تھا۔ دونوں بہنوں کو ان کے رشتہ داروں نے کسی بہانے سے پاکستان بلایا اور ان کے حقیقی بھائی شہریار اور چچا محمد حنیف نے اپنے ساتھیوں کے ساتھ مل کر انہیں گولی مار کر قتل کر دیا۔ ملزمان واردات کے بعد فرار ہوگئے۔ پولیس رپورٹ کے مطابق ملزمان لڑکیوں پر دباؤ ڈال رہے تھے کہ وہ اپنے شوہروں کی سپین امیگریشن کے لیے دستاویزات تیار کریں۔ لیکن لڑکیاں اپنے شوہروں کو پسند نہیں کرتی تھیں اور کچھ اور لوگوں سے شادی کرنے کے لیے طلاق چاہتی تھیں۔

واقعے سے ایک روز قبل ملزمان نے انہیں اور ان کی والدہ عذرا بی بی کو دھوکے سے پاکستان بلایا تھا۔ پولیس کو اطلاع ملی کہ نوتھیا گلیانہ گاؤں میں ملزمان لڑکیوں کی پٹائی کر رہے ہیں۔

پولیس جب موقع پر پہنچی تو ملزمان نے اس پر فائرنگ کر دی اور لڑکیوں کو دوسرے کمرے میں لے جا کر گولی مار کر ہلاک کر دیا۔ پولیس نے پوسٹ مارٹم کے بعد لاشیں ورثاء کے حوالے کر دیں۔

تھانہ گلیانہ کے اے ایس آئی یاسر ندیم کی مدعیت میں محمد حنیف عرف گوگا، شہریار عباس، قاصد حنیف، عتیق حنیف، فرزانہ، حسن اورنگزیب اور دیگر کے خلاف مقدمہ درج کر لیا گیا۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں