15

پی ٹی آئی کا مارچ حکومت کے نہیں اسٹیبلشمنٹ کے خلاف ہے، مریم نواز

پی ٹی آئی کا مارچ حکومت کے نہیں اسٹیبلشمنٹ کے خلاف ہے، مریم نواز

لاہور: پاکستان مسلم لیگ نواز کی مرکزی نائب صدر مریم نواز نے کہا ہے کہ عمران خان کا لانگ مارچ حکومت نہیں اسٹیبلشمنٹ کے خلاف ہے۔

منگل کو یہاں پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے سوال کیا کہ عمران خان کے لانگ مارچ کی فنڈنگ ​​کون کر رہا ہے؟ “یہ لانگ مارچ اسٹیبلشمنٹ کے خلاف ہے،” انہوں نے کہا کہ ملک بچانے کے لیے تمام اداروں کو ایک پیج پر ہونا چاہیے۔

انہوں نے عدلیہ سے اپیل کی کہ وہ ملکی مفاد کو مقدم رکھیں اور میڈیا رپورٹس پر ردعمل ظاہر کرنے سے باز رہیں۔ انہوں نے کہا کہ “قرآن میں اس فتنے سے نمٹنے کا طریقہ موجود ہے، قرآن ہمیں بتاتا ہے کہ فتنے سے کیسے نمٹا جائے۔”

انہوں نے کہا کہ عمران خان مذہب کا کارڈ استعمال کر رہے ہیں اور ریاست مدینہ کا نعرہ لگا رہے ہیں لیکن پاکستانی عوام نے ان کا بھیانک چہرہ دیکھ لیا ہے۔ تمام ادارے فتنے کو پہچانیں اور اسے روکنے کی کوشش کریں۔ حکومت کے پاس معلومات ہیں کہ انھوں نے آنسو گیس کے گولے اور ہتھیار جمع کیے ہیں،‘‘ اس نے دعویٰ کیا۔

مریم نواز نے کہا کہ لاہور میں کانسٹیبل کی شہادت کے ذمہ دار عمران خان ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان کی دھونس، دھاندلی اور دباؤ کے ہتھکنڈوں سے حکومت پر کوئی فرق نہیں پڑے گا۔

پارٹی کے مرکزی سیکرٹریٹ ماڈل ٹاؤن میں ہونے والی پریس کانفرنس میں طلال چوہدری، عظمیٰ بخاری اور دیگر پارٹی رہنما بھی موجود تھے۔

مریم نے بتایا کہ شہید کانسٹیبل کے پانچ بچے ہیں، سب سے بڑی بیٹی کی عمر 11 سال ہے جب کہ سب سے چھوٹی کی عمر آٹھ ماہ ہے۔

’’ہاں، مارچ کے مقصد کے بارے میں کوئی شک نہیں ہے۔ قانون نافذ کرنے والے کو سینے میں گولی مارنا ان کے عزائم کو بے نقاب کرتا ہے۔ حکومت جو کچھ بھی کر رہی ہے، جو بھی حفاظتی اقدامات کر رہی ہے وہ عوام کے تحفظ کے لیے ہیں اور یہ اس کی ذمہ داری ہے،‘‘ انہوں نے کہا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کے پاس اطلاعات ہیں کہ عمران خان انتشار پھیلانا چاہتے ہیں۔

انہوں نے کہا، “مارچ کے شرکاء کے پاس آنسو گیس کے گولوں اور دیگر ہتھیاروں کا ذخیرہ ہے،” انہوں نے مزید کہا کہ عمران نے قانون نافذ کرنے والے اداروں پر حملہ کرنے اور خون بہانے کا منصوبہ بنایا تھا۔ انہوں نے کہا کہ “وہ پہلے ہی ایک کانسٹیبل کو شہید کر چکا ہے اور اس عمل نے اس کے عزائم کو بے نقاب کر دیا ہے،” انہوں نے کہا۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان حکومت سے بے دخلی کے بعد صدمے میں ہیں، انہوں نے مزید کہا کہ وہ اپنے خلاف غیر ملکی سازش کا بیانیہ بنا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جب ان کے سارے ڈرامے ناکام ہوئے اور سچ سامنے آیا تو اس نے لانگ مارچ کے ذریعے ملک کو آگ لگانے کا فیصلہ کیا، عمران خان کہہ رہے ہیں کہ ملک سری لنکا بنے گا لیکن ایسا کبھی نہیں ہوگا۔

آپ ملک کو سری لنکا جیسا بنانے کی کوشش کر رہے ہیں لیکن انشاء اللہ آپ کامیاب نہیں ہوں گے۔ میں تم سے کہنا چاہتا ہوں کہ اپنے بیٹوں کو لے آؤ اور کوئی انہیں ہاتھ نہیں لگائے گا۔ انقلاب گھر سے شروع ہوتا ہے لیکن آپ کے بچے ملک سے باہر ہیں اور آپ انقلاب لانے کے لیے مٹی کے بیٹوں کو بلا رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان نے کہا کہ ان کے خلاف امریکی سازش ہے لیکن جب انہوں نے سی این این کو انٹرویو دیا تو اس پر بات نہیں کی۔ انہوں نے کہا کہ وہ ناراض ہیں کیونکہ امریکی صدر نے انہیں کبھی فون نہیں کیا تھا۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان نے بے وقوفانہ طور پر پاکستان کے دوست کو اس کا دشمن قرار دیا ہے اور کہا کہ کوئی ملک ان کے ساتھ کھڑا نہیں ہے۔ اس نے کہا کہ وہ جھوٹی مہم چلا رہا ہے اور جھوٹی داستانیں بنا رہا ہے۔

“آپ کس قسم کی آزادی کی بات کر رہے ہیں؟ آپ نے اس کا نام آزادی مارچ رکھا ہے لیکن آپ فرح گوگی کو بھاگنے میں مدد کرتے ہیں۔ آپ اداروں کو دھمکیاں دے رہے ہیں۔ آپ اداروں پر دباؤ ڈالنا چاہتے ہیں۔ آپ کہتے تھے کہ میں نے موجودہ چیف سے غیر جانبدار چیف نہیں دیکھا۔

مریم نواز نے کہا کہ جب چیف الیکشن کمشنر کو غیر ملکی فنڈنگ ​​کے ناقابل تردید ثبوت ملے تو عمران خان نے اس کے خلاف مہم شروع کر دی۔ انہوں نے کہا کہ جب نواز شریف اور ان کی بیٹی کو سزا سنائی گئی تو عدالتیں آزاد تھیں۔ انہوں نے عدلیہ کے خلاف اس وقت مہم شروع کی جب عدالتوں نے ان کے غیر آئینی اقدامات پر ان کے خلاف فیصلہ دیا تھا۔

جب عدالت نے شہباز شریف کے خلاف سوموٹو لیا تو انہوں نے یو ٹرن لیا اور اس پر تعریفیں برسانا شروع کر دیں۔ میں عدالتوں سے کہنا چاہتا ہوں کہ ملک کے حق میں فیصلے دیں۔ قوم کے مستقبل کے حق میں فیصلہ کریں۔

مریم نواز نے کہا کہ عمران خان کہہ رہے ہیں کہ حمزہ شہباز وزیراعلیٰ پنجاب نہیں تو وزیراعلیٰ کون تھا، فرح گوگی، احسن گجر یا عثمان بزدار؟ انہوں نے کہا کہ حمزہ شہباز منتخب وزیر اعلیٰ ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اگر اداروں نے فیصلہ کیا کہ وہ آئین اور قانون کی پاسداری کریں گے اور ان کا ساتھ نہیں دیں گے تو عمران نے ان کے خلاف مہم شروع کر دی۔ انہوں نے کہا کہ بہت جلد نواز شریف یہاں ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ اگر حکومت کی راہ میں رکاوٹیں نہ کھڑی کی گئیں تو وہ ڈیلیور کرے گی، ملک کی سمت درست کرے گی اور بحران سے نکالے گی۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں