15

عمران خان سے آخری دن تک عدم اعتماد کی امید نہیں تھی، شیخ رشید

شیخ رشید۔  تصویر: دی نیوز/فائل
شیخ رشید۔ تصویر: دی نیوز/فائل

اسلام آباد: سابق وزیر داخلہ شیخ رشید نے منگل کو کہا کہ عمران خان کو آخری دن تک تحریک عدم اعتماد کی امید نہیں تھی۔

شیخ رشید جیو نیوز کے پروگرام آج شازیب خانزادہ کے ساتھ میں گفتگو کر رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ مجھے اس حقیقت کا احساس ہوا کہ جب ایم کیو ایم اور بی اے پی (بلوچستان عوامی پارٹی) نے اتحاد چھوڑا تو بی اے پی کا ’’باپ‘‘ (سرپرست) ہمارے ساتھ نہیں تھا۔

شیخ رشید نے اس تاثر کو دور کیا کہ عمران نومبر میں کسی مخصوص شخص کو آرمی چیف مقرر کرنا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ان لوگوں نے جنرل قمر باجوہ اور جنرل فیض کے خلاف چودہ مرتبہ جو زبان استعمال کی اس کے ثبوت ان کے فون پر موجود ہیں، لیکن اب یہ لوگ ”جوتے چاٹنے“ کے چکر میں ہیں، انہوں نے کہا کہ لوگ آتے جاتے ہیں لیکن ادارے نہیں بھولتے۔ .

انہوں نے کہا کہ وہ غصے سے شہباز شریف کو اندر لائے۔ خواجہ آصف یا احسن اقبال شہباز شریف سے بہتر انتخاب تھے۔ اب جو ہو رہا ہے اس کا سامنا کریں۔” انہوں نے دنیا کے سب سے بڑے ’’لوٹا‘‘ (ٹرن کوٹ) کو قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر بنائے جانے پر برہمی کا اظہار کیا۔

اس نے افسوس کا اظہار کیا کہ وہ وزارت داخلہ کے سربراہ تھے لیکن اس کے ماتحت افراد نے اس کی تین بہنوں کے گھروں پر چھاپے مارے۔ ایک تلخ سابق وزیر داخلہ نے اصرار کیا کہ حکومت زندہ نہیں رہنے والی ہے اور دنیا کی کوئی طاقت اسے گرنے سے نہیں بچا سکتی۔ اس نے ان کے جانشینوں کے ہاتھوں ‘ان لوگوں’ کے ساتھ بدترین ہونے کی پیش گوئی کی۔

انہوں نے الزام لگایا کہ حکمرانوں نے نیب کیسز کی فائلیں ماڈل ٹاؤن منتقل کر دی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عمران نے انہیں سزا دلانے کی کوشش کی لیکن اس ملک میں سب کچھ قابل فروخت ہے۔ انہوں نے کہا کہ میں ایسی جمہوریت پر لعنت بھیجتا ہوں جو بڑے چور کو وزیراعظم بننے دیتی ہے اور فون چوری کرنے والے کو جیل بھیج دیتی ہے۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں