14

اگر انتظام نہ کیا گیا تو، Covid-19 jabs کی 31m خوراکیں اگست تک ختم ہو جائیں گی۔

کراچی: مختلف کوویڈ 19 ویکسینز کی تقریباً 31 ملین خوراکیں رواں سال اگست تک ختم ہونے والی ہیں۔ صورتحال صحت کے حکام کو ویکسین کے اہل افراد کو بوسٹر ڈوز کے انتظام کے لیے دو ہفتے کی ملک گیر مہم شروع کرنے پر مجبور کر رہی ہے۔

CoVID-19 ویکسینیشن مہم سے وابستہ ایک اہلکار نے دی نیوز کو بتایا کہ ویکسینیشن مہم آنے والے پیر سے شروع ہو جائے گی تاکہ غیر ویکسین یا جزوی طور پر ویکسین شدہ افراد کو مکمل طور پر ویکسین لگوانے پر آمادہ کیا جا سکے۔ انہوں نے مزید کہا کہ جو لوگ مکمل طور پر ویکسین کر چکے ہیں وہ پہلی اور دوسری بوسٹر خوراک لینے کے لیے قائل ہو جائیں گے “کیونکہ Pfizer’s اور Moderna’s Covid-19 ویکسینز کی 31 ملین خوراکیں اس سال اگست تک ختم ہو جائیں گی”۔

صحت کے حکام نے بتایا کہ اتفاق سے، 120 ملین مکمل ویکسین شدہ لوگوں میں سے صرف 9 ملین کو اب تک کووِڈ 19 ویکسین کی پہلی بوسٹر ڈوز ملی ہے، انہوں نے مزید کہا کہ بمشکل 2 فیصد لوگ کووِڈ 19 کی دوسری بوسٹر خوراک حاصل کرنے میں کامیاب ہو سکے ہیں۔ ویکسین

پاکستان نے COVAX سہولت کے ذریعے MRNA ویکسینز کی لاکھوں خوراکیں حاصل کیں، جن میں Pfizer، Moderna اور AstraZeneca کی ویکسینز شامل ہیں جبکہ ملک کو چین سے سائنو فارم، سینوواک اور کینسینو جیسی چینی ویکسینز کی کئی ملین خوراکیں بھی بطور عطیہ موصول ہوئیں۔ اس کے علاوہ، ملک نے 143 ملین اہل آبادی کو ویکسین دینے کے لیے امریکہ، چینی اور روسی بائیو ٹیکنالوجی کمپنیوں سے ویکسین بھی خریدی ہیں۔

خوش قسمتی سے، کئی ہفتوں سے کسی موت کی اطلاع نہیں ملی، ملک میں کورونا وائرس کی بیماری اچھی طرح سے قابو میں ہے کیونکہ جمعہ کو مثبتیت کی شرح صرف 0.25 فیصد تھی۔

سندھ کوویڈ 19 ویکسینیشن کے انتظام کے لحاظ سے ملک کا بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والا صوبہ ہے، جہاں 98 فیصد یا 33 ملین سے زائد افراد کو مکمل طور پر ویکسین لگائی گئی ہے، اس کے بعد اسلام آباد کا نمبر ہے، جہاں 1.2 ملین افراد یا 90 فیصد افراد ویکسین کے اہل ہیں۔ ٹیکہ لگایا

حکام نے بتایا کہ پنجاب میں، اہل آبادی کا تقریباً 86 فیصد مکمل طور پر ویکسین کر چکا ہے، جس کا مطلب ہے کہ 64 ملین سے زائد افراد کووِڈ 19 ویکسین کی دونوں خوراکیں حاصل کر چکے ہیں، انہوں نے مزید کہا کہ خیبرپختونخوا میں، اہل آبادی کا 63 فیصد یعنی تقریباً 14 ملین افراد، مکمل طور پر ویکسین شدہ ہیں۔ بلوچستان کی تقریباً 59 فیصد آبادی اور آزاد کشمیر کی 67 فیصد آبادی کو کووڈ-19 کے خلاف مکمل طور پر ویکسین دی گئی ہے۔ گلگت بلتستان کوویڈ 19 ویکسینیشن کے انتظام کے لحاظ سے بدترین کارکردگی کا مظاہرہ کر رہا ہے کیونکہ اس کی اہل آبادی میں سے صرف 53 فیصد یا نصف ملین سے زائد افراد کو ویکسینیشن دی گئی تھی۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں