15

عمران خان، بشریٰ بی بی اور فرح گٹھ جوڑ نے اربوں کی کمائی: مریم نواز

وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب 7 جون 2022 کو اسلام آباد میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کر رہی ہیں۔
وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب 7 جون 2022 کو اسلام آباد میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کر رہی ہیں۔

اسلام آباد: وزیر اطلاعات و نشریات مریم اورنگزیب نے پیر کے روز کہا کہ عمران خان، ان کی اہلیہ بشریٰ بی بی اور ان کی دوست فرح گوگی کے درمیان گٹھ جوڑ ہے جس نے پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے دور میں اختیارات کے ناجائز استعمال اور کرپشن کے ذریعے اربوں روپے کمائے۔ حکومت۔

پی ٹی آئی حکومت کے دوران صرف عمران، بشریٰ بی بی اور فرح گوگی کی ٹرائیکا پروان چڑھی اور یہی وہ نیا پاکستان تھا جس کا پی ٹی آئی سربراہ نے قوم کو گمراہ کرنے کا وعدہ کیا تھا، انہوں نے کہا کہ 2018 میں پاکستان ترقی کر رہا تھا اور لوگ خوشحال ہو رہے تھے۔ سی پیک جیسے منصوبے زیرو لوڈشیڈنگ اور گیم چینجر پراجیکٹس تھے لیکن پی ٹی آئی کے دور حکومت میں حالات بدلے ملک غریب اور حکمران امیر ہو گئے، عمران خان نے انگوٹھیوں اور گھڑیوں کے لیے قومی مفادات سے سمجھوتہ کیا۔ محض پانچ قیراط کی انگوٹھی میں فروخت ہوئی، اس نے افسوس کا اظہار کیا۔

مریم نے کہا کہ عمران خان کے حواریوں نے پہلے آٹے اور چینی کی برآمد کرکے مصنوعی مانگ پیدا کی لیکن ان کی درآمد کی اجازت دی۔ چینی 120 روپے فی کلو فروخت ہوئی۔ انہوں نے کہا کہ اتحادی حکومت نے پاکستان اور ترکی کے درمیان سفارتی تعلقات کے 75 سال مکمل ہونے پر اشتہارات جاری کیے لیکن پی ٹی آئی معاملے کو ہائی کورٹ لے گئی۔

ترکی میں بھی جشن منایا گیا جہاں وزیر اعظم شہباز شریف کے حالیہ دورے کے دوران ان کا پرتپاک استقبال کیا گیا جس سے لگتا ہے کہ پی ٹی آئی چیئرمین کو تکلیف ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان نے اپنے منصوبوں کو سبوتاژ کرکے غیر ملکی سرمایہ کاروں کو ناراض کیا۔ یہاں تک کہ اس نے نیب کے ذریعے ترک کمپنیوں کے نمائندوں کو بھی قید کروایا۔ اب وزیر اعظم شہباز شریف پی ٹی آئی کی غلط حکمرانی سے پیدا ہونے والی گندگی کو صاف کر رہے ہیں۔ “جب ترک سرمایہ کار پی ٹی آئی کے چار سال کی کہانیاں سناتے ہیں تو ہمارا سر شرم سے جھک جاتا ہے۔”

انہوں نے کہا کہ عمران خان چار سال تک دوسروں پر کرپشن کے الزامات لگاتے رہے، جھوٹ بولتے رہے اور مخالفین پر انگلیاں اٹھاتے رہے لیکن اب ان کی اپنی کرپشن کی داستانیں ہر گزرتے دن کے ساتھ منظر عام پر آ رہی ہیں۔ پچھلی حکومت نے عمران خان کے پروجیکشن کے لیے 3.29 ارب روپے کے اشتہارات دیے تھے لیکن میڈیا ہاؤسز کو واجبات ادا نہیں کیے تھے۔ پی ٹی آئی کے سربراہ نے صحت عامہ اور قومی مفادات کی قیمت پر پیسہ بھی کمایا۔

پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار اپنے عہدے کے 100 دن مکمل ہونے پر اشتہار دینے پر سابقہ ​​حکومت پر طنز کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ وزیراعظم ہاؤس میں پری بجٹ بزنس سیمینار کا انعقاد کیا جا رہا تھا۔ جس میں پوری تاجر برادری موجود ہو گی۔ وزیر اعظم تقریب کی صدارت کریں گے اور تاجر برادری کی قیمتی تجاویز کو بجٹ میں شامل کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کی معیشت ایک غیر معمولی بحران سے گزر رہی ہے اور اس کی اصلاح کے لیے تمام اسٹیک ہولڈرز کا تعاون ضروری ہے۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں