16

مزاری کی گرفتاری کی تحقیقات کے لیے کمیشن تشکیل

اسلام آباد: وفاقی حکومت نے انسانی حقوق کی سابق وزیر اور پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کی رہنما ڈاکٹر شیریں مزاری کی گرفتاری کی تحقیقات کے لیے ایک کمیشن تشکیل دے دیا ہے، پیر کو مقامی میڈیا نے رپورٹ کیا۔

پی ایم ایل این کی زیر قیادت حکومت نے 21 مئی کو ڈاکٹر شیریں مزاری کی گرفتاری کی تحقیقات کے لیے پانچ رکنی خصوصی کمیشن تشکیل دیا۔ اس حوالے سے کابینہ ڈویژن نے نوٹیفکیشن بھی جاری کر دیا ہے۔

نوٹیفکیشن کے مطابق جسٹس (ر) شکور پراچہ، سابق انسپکٹر جنرل (آئی جی) ڈاکٹر نعیم خان، سابق سیکریٹری سیف اللہ چٹھہ، ہوم سیکریٹری اور چیف کمشنر پانچ رکنی کمیشن کا حصہ ہوں گے۔ دریں اثنا، کابینہ ڈویژن نے کمیشن کے دفتر اور دیگر سہولیات کے لیے چیف کمشنر اسلام آباد کو خط بھی لکھ دیا ہے۔ واضح رہے کہ سابق وزیر برائے انسانی حقوق شیریں مزاری کو پولیس نے 21 مئی کو ان کے گھر کے باہر سے گرفتار کیا تھا۔

ہائی کورٹ نے حکام کو ہدایت کی کہ پی ٹی آئی کے مرکزی رہنما کو فوری طور پر رہا کیا جائے اور وفاقی حکومت کو مزاری کی متنازعہ حراست کی تحقیقات کے لیے جوڈیشل کمیشن بنانے کا حکم دیا۔ عدالت نے وفاقی حکومت کو عدالتی کمیشن کے لیے ٹرمز آف ریفرنس (ٹی او آرز) آئی ایچ سی کے سامنے پیش کرنے کی ہدایت کی۔ عدالت نے مزاری کی گرفتاری کو غیر قانونی قرار دے دیا۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں