12

پی ٹی آئی اب تسلیم کرتی ہے کہ اس نے حکومت کے لیے اقتصادی کانیں بچھا دی، مریم نواز

پی ایم ایل این کی نائب صدر مریم نواز 9 جون 2022 کو اسلام آباد ہائی کورٹ میں پیشی کے بعد میڈیا سے گفتگو کر رہی ہیں۔ تصویر: ٹوئٹر/پی ایم ایل این ویڈیو کا اسکرین گریب
پی ایم ایل این کی نائب صدر مریم نواز 9 جون 2022 کو اسلام آباد ہائی کورٹ میں پیشی کے بعد میڈیا سے گفتگو کر رہی ہیں۔ تصویر: ٹوئٹر/پی ایم ایل این ویڈیو کا اسکرین گریب

اسلام آباد: پاکستان مسلم لیگ نواز (پی ایم ایل این) کی نائب صدر مریم نواز نے جمعرات کو کہا کہ پاکستان تحریک انصاف کی سبکدوش ہونے والی حکومت نے اب تسلیم کیا ہے کہ اس نے پی ایم ایل این کی زیر قیادت مخلوط حکومت کے لیے اقتصادی بارودی سرنگیں چھوڑ دی ہیں۔

ایون فیلڈ اپارٹمنٹس ریفرنس میں اسلام آباد ہائی کورٹ (آئی ایچ سی) میں پیشی کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مریم نواز نے کہا کہ حکومت ملک کی معاشی صورتحال کو بہتر بنانے کے لیے دن رات کام کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ نئی حکومت شکایت کرنے کی بجائے بحران کے حل کے لیے عملی اقدامات کر رہی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہم عمران خان کی بچھائی گئی بارودی سرنگیں ہٹا رہے ہیں۔

عمران خان کے خلاف تحریک عدم اعتماد کے بارے میں سابق وزیر داخلہ شیخ رشید احمد کے بیان پر ردعمل دیتے ہوئے پی ایم ایل این کے نائب صدر نے کہا کہ اگر سابق وزیر اعظم کو تحریک عدم اعتماد کا علم تھا تو انہوں نے خط اور غیر ملکی کے جھوٹے دعوے کیوں کئے۔ ان کی برطرفی کے پیچھے سازش

انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم شہباز شریف عوام کو درپیش مسائل سے بخوبی آگاہ ہیں۔ تاہم انہوں نے بجلی کی طویل بندش کا ذمہ دار پچھلی حکومت کو ٹھہرایا۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف نے 2018 میں لوڈشیڈنگ فری پاکستان عمران خان کے حوالے کیا تھا لیکن عمران خان نے 2022 میں پانچ سے دس گھنٹے بجلی کی لوڈشیڈنگ کر کے پاکستان میاں شہباز شریف کے حوالے کر دیا۔

انہوں نے کہا کہ شہباز شریف خیبرپختونخوا کے عوام کو سستا آٹا اور ریلیف دینے کی کوششیں کر رہے ہیں لیکن کے پی حکومت عمران خان کو ریلیف دے رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ بنی گالہ کا نام منی گالا ہونا چاہیے، جو پیسہ بنی گالہ میں جا رہا ہے وہ ٹیکس دہندگان کا پیسہ ہے۔

مریم نے کہا کہ وہ نئے مینڈیٹ کے حق میں ہیں لیکن جب عمران خان نے مظاہروں کے ساتھ اسلام آباد پر حملہ کرنے کا اعلان کیا تو نواز شریف سمیت پی ایم ایل این ان کے منصوبوں کے سامنے کھڑی ہوگئی۔

مریم نے عمران خان کی جانب سے اداروں کو سیاست میں گھسیٹنے کی کوششوں کی مذمت کرتے ہوئے مزید کہا کہ اس عمل کو اب ختم ہونا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ ہر ادارے کو اپنا کام کرنے دیا جانا چاہیے اور حکومت کو اپنا کام خود کرنا چاہیے۔ مریم نے کہا کہ اگر کسی نے غلط کیا ہے تو اسے جوابدہ ہونا چاہیے۔

اس موقع پر وزیر اطلاعات و نشریات مریم اورنگزیب، وزیر مملکت برائے پیٹرولیم سینیٹر ڈاکٹر مصدق ملک، سابق وزیر اطلاعات پرویز رشید، سابق وزیر مملکت برائے داخلہ محمد طلال چوہدری اور پی ایم ایل این کے دیگر رہنما بھی موجود تھے۔ پی ایم ایل این کے نائب صدر نے بھی ڈاکٹر عامر لیاقت حسین کے انتقال پر دکھ کا اظہار کیا۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں