10

الیکشن، نیب بلز ایکٹ آف پارلیمنٹ بن گئے۔

پاکستان کی پارلیمنٹ۔  تصویر: دی نیوز/فائل
پاکستان کی پارلیمنٹ۔ تصویر: دی نیوز/فائل

اسلام آباد: صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کی جانب سے دو بل انتخابات (ترمیمی) بل 2022 اور قومی احتساب (ترمیمی) بل 2022 کو بغیر دستخط کے واپس بھیجے جانے کے بعد قومی اسمبلی سیکریٹریٹ نے بدھ کو ایک نوٹیفکیشن جاری کردیا۔ دونوں بلوں کو آئین کے آرٹیکل 75 کی شق 2 کے مطابق پارلیمنٹ کے ایکٹ میں نافذ کرنا۔

قومی اسمبلی سیکرٹریٹ کے نوٹیفکیشن کے مطابق، مجلس شوریٰ (پارلیمنٹ)، الیکشنز (ترمیمی) ایکٹ 2022 اور قومی احتساب (ترمیمی) ایکٹ 2022 کے ایکٹ پر عمل کرتے ہوئے سمجھا جاتا ہے کہ صدر کی طرف سے اس کی منظوری دی گئی ہے۔ آئین کے آرٹیکل 75 کی شق 2 کے تحت 22 جون 2022 سے نافذ العمل ہے۔

قومی اسمبلی سیکرٹریٹ سے نوٹیفکیشن کے اجراء کے بعد دونوں بل گزٹ میں جاری ہونے کے بعد ملک میں نافذ ہیں۔ آئین کے آرٹیکل 76 کی شق 2 کے مطابق، “جب صدر نے کوئی بل مجلس شوریٰ (پارلیمنٹ) کو واپس کر دیا ہے، تو مجلس شوریٰ (پارلیمنٹ) مشترکہ اجلاس میں اس پر دوبارہ غور کرے گی اور، اگر یہ مجلس شوریٰ (پارلیمنٹ) کی طرف سے، ترمیم کے ساتھ یا اس کے بغیر، دونوں ایوانوں میں موجود اور ووٹنگ کرنے والے ارکان کی اکثریت کے ووٹوں سے دوبارہ منظور کیا جاتا ہے، تو اسے آئین کے مقاصد کے لیے سمجھا جائے گا۔ دونوں ایوانوں سے منظور کیا جائے گا اور اسے صدر کے سامنے پیش کیا جائے گا، اور صدر دس ​​دن کے اندر اپنی منظوری دے گا، ایسا نہ کرنے کی صورت میں یہ سمجھا جائے گا کہ یہ منظوری دی گئی ہے۔ جب صدر نے منظوری دے دی۔ [or is deemed to have assented] کسی بل کی صورت میں یہ قانون بن جائے گا اور اسے مجلس شوریٰ (پارلیمنٹ) کا ایکٹ کہا جائے گا۔

واضح رہے کہ جب قومی اسمبلی اور سینیٹ نے دونوں بل الگ الگ منظور کیے تو صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے ان بلوں پر دستخط نہیں کیے تھے۔ پھر انہیں پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں کے مشترکہ اجلاس کے حوالے کیا گیا، جس نے دونوں کو اکثریتی ووٹ سے منظور کر کے دوبارہ صدر کے پاس منظوری کے لیے بھیج دیا۔ لیکن ایک بار پھر صدر نے دونوں بلوں پر دستخط کیے بغیر واپس کر دیا، یوں یہ بل آئین کے آرٹیکل 75 کے تحت ایکٹ میں تبدیل ہو گئے۔

قومی اسمبلی سیکرٹریٹ نے دونوں بلوں کو آئین کے آرٹیکل 75 کی شق 2 کے مطابق ایکٹ میں نافذ کرنے سے متعلق نوٹیفکیشن جاری کیا۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں