16

عمران نفرت کا پیامبر ہے، خواجہ آصف

وزیر دفاع خواجہ محمد آصف۔  تصویر: دی نیوز/فائل
وزیر دفاع خواجہ محمد آصف۔ تصویر: دی نیوز/فائل

اسلام آباد: وزیر دفاع خواجہ محمد آصف نے پیر کے روز کہا کہ پی ٹی آئی کے چیئرمین عمران خان کی جانب سے نہ صرف پاکستان کے اندر بلکہ 10 ملین سمندر پار پاکستانیوں میں پیدا ہونے والی تقسیم کی وجہ سے کینیڈین پارلیمنٹ کے ایک رکن نے پاکستان، اس کے اداروں اور رہنماؤں کو بدنام کیا۔

خواجہ آصف نے قومی اسمبلی کے فلور پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ کینیڈین پارلیمنٹ کے ایک رکن نے عمران خان کی جانب سے پاکستان اور بیرون ملک مقیم پاکستانیوں میں پیدا کردہ تقسیم کی وجہ سے پاکستان، اس کے اداروں اور رہنماؤں کو گالی دی۔ انہوں نے دوٹوک الفاظ میں کہا کہ عمران خان کے کہنے پر لابیاں کینیڈا، امریکا، برطانیہ اور دیگر ممالک میں سرگرم ہیں۔ انہوں نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان کو ملک کی کوئی عزت نہیں اور ان کے کہنے پر ان ممالک کی لابیاں پاکستان، اداروں اور چیف آف آرمی سٹاف پر زبانی حملے کر رہی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کی 75 سالہ تاریخ میں عمران خان واحد لیڈر ہیں جن کے لیڈر لندن، مونٹریال، یو اے ای اور دیگر ممالک کی سڑکوں پر مخالفین کو کوستے رہے اور مسجد نبوی کے احاطے کو بھی نہیں بخشا۔ دیکھا).

انہوں نے اس بات کا اعادہ کیا کہ پاکستان کے بارے میں منفی تاثر پیدا کیا جا رہا ہے جیسا کہ کینیڈین پارلیمنٹرین نے اپنی پارلیمنٹ کے فلور پر کھڑے ہو کر کیا۔ انہوں نے کہا کہ میں کینیڈا کی حکومت سے مطالبہ کرتا ہوں کہ وہ اپنے رکن پارلیمنٹ کے پاکستان اور اس کے اداروں کے خلاف غیر ذمہ دارانہ بیان کا نوٹس لے۔

خواجہ آصف نے کہا کہ کینیڈین پارلیمنٹ کے رکن نے پاکستان کے آرمی چیف کے طے شدہ دورے کے دوران پاکستان، اس کے عوام، اداروں کو تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ دورے پر 50 ہزار ڈالر کے اخراجات پیسے کا ضیاع ہے۔ انہوں نے کہا کہ کینیڈین پارلیمنٹیرین نے انسانی حقوق کے حوالے سے نہ صرف پاکستان کے خلاف بات کی بلکہ اس کے بارے میں بھی بات کی جو انہوں نے کہا کہ وہ غیر ملکی مداخلت یا سازش ہے جس کا نتیجہ ان کے بقول عمران خان کی برطرفی کی صورت میں نکلا۔ انہوں نے کہا کہ مجھے یقین ہے کہ یہ کسی ایک پارلیمنٹرین کی آواز ہے نہ کہ ان کی پوری پارلیمنٹ کی لیکن میں کینیڈا کی حکومت سے ان کی تقریر کا نوٹس لینے کا مطالبہ کروں گا۔

خواجہ آصف نے کہا کہ وہ انسانی حقوق کے حوالے سے کینیڈا اور دیگر مغربی ممالک کا ریکارڈ سیدھا رکھنا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کینیڈین پارلیمنٹیرین نے پاکستان میں انسانی حقوق کا درد محسوس کیا لیکن وہ اور مغربی ممالک یہ نہیں دیکھ سکے کہ بھارت کے مقبوضہ کشمیر، فلسطین، بھارت کے اندر اور روہنگیا کی مسلم آبادی کے مسلمانوں کے ساتھ کیا ہو رہا ہے۔ “مغربی تہذیب میں یہ ایک برانڈ بن گیا ہے کہ وہ انصاف کے ایک منتخب احساس کو استعمال کرتے ہیں۔” وزیر دفاع نے کہا کہ کینیڈا کے رکن پارلیمنٹ نے انہیں یہ کہنے پر اکسایا کہ کینیڈا خود G-7 ممالک میں اس فوبیا کی وجہ سے مسلمانوں پر حملوں کی بات کرتا ہے۔

عمران خان کے بارے میں وزیر دفاع نے کہا کہ انہوں نے نفرت کے سوا کوئی میراث نہیں چھوڑی جو انہوں نے معاشرے میں پھیلائی اور وقت بتائے گا کہ وہ ملک کو دہائیاں پیچھے کیسے لے گئے۔ خواجہ آصف نے عمران خان کا نام لیے بغیر کہا کہ انہیں آئینی طور پر گرایا گیا اور اعلیٰ عدلیہ نے بھی اس کی تائید کی۔ انہوں نے کہا کہ آج بھی ایوان میں اکثریتی ارکان پارلیمنٹ بیٹھے ہیں اور جو اقلیت میں ہیں وہ یہاں موجود نہیں ہیں۔

خواجہ آصف نے یاد دلایا کہ پاکستان کو افغانستان میں سوویت یونین کی جنگ کا آلہ کار بنایا گیا تھا اور ایسا ہی ہوا جب پاکستان نے نائن الیون کے بعد امریکی جنگ لڑی۔ انہوں نے کہا کہ ’’بلکہ یہ مغربی دنیا کے ان ممالک کی جنگ تھی جہاں اسلام فوبیا کا راج ہے لیکن دنیا میں مسلمانوں کے انسانی حقوق کی پامالی کی بات کرتے ہوئے کینیڈا یا کسی اور مغربی ملک میں کسی کا ضمیر نہیں جاگا‘‘۔

خواجہ آصف نے کہا کہ پی ٹی آئی کی آخری حکومت اور ان کے اعلیٰ رہنما نے نہ صرف اندرون ملک پاکستانیوں کو تقسیم کیا بلکہ اس نے سمندر پار پاکستانیوں میں تفرقہ اور نفرت بھی پیدا کی۔ انہوں نے کہا کہ 90 لاکھ سے زائد بیرون ملک مقیم پاکستانی، جن میں سے نصف متحدہ عرب امارات اور سعودی عرب میں ہیں، ہمارا اثاثہ ہیں کیونکہ وہ سخت محنت کرتے ہیں اور اپنے ملک کو ترسیلات بھیجتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ہمارے بہت سے سیاسی اختلافات ہیں لیکن ہمارے ذاتی تعلقات کبھی خراب نہیں ہوئے لیکن اس شخص نے معاشرے میں تقسیم اور نفرت پیدا کی۔

خواجہ آصف نے کہا کہ عمران خان نے ملک کو دونوں ہاتھوں سے لوٹا اور ان کے خلاف کیسز سامنے آرہے ہیں اور تمام ایگزیکٹو اداروں کو مخالفین کو نشانہ بنانے کے لیے استعمال کیا۔

اسی وقت، وزیر نے کہا کہ مخلوط حکومت نے پچھلے دو تین مہینوں میں مخالفین کو نشانہ بنانے میں ملوث نہیں ہے، یہ کہتے ہوئے کہ وہ کسی کے خلاف فرضی مقدمات درج نہیں کریں گے جب تک کہ کوئی آئین اور قانون کی خلاف ورزی نہیں کرتا۔ انہوں نے نشاندہی کی کہ عمران خان ان مقدمات کی سماعت میں ویڈیو لنک کے ذریعے شرکت کرتے ہیں جو ان کی حکومت نے مخالفین کے خلاف درج کرائے تھے جبکہ موجودہ وزیر اعظم اور وزیر اعلیٰ خود عدالتوں میں ذاتی طور پر پیش ہوتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان اس وقت تک کے پی کے صوبے سے باہر نہیں آئے جب تک انہیں گرفتاری سے قبل ضمانت نہیں مل جاتی۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان نے خود چار سال سے بھی کم عرصے میں انسانی حقوق کی ریکارڈ خلاف ورزیاں کیں اور ان کے متاثرین بھی اس ایوان میں بیٹھے ہیں۔ خواجہ آصف نے دوہری شہریت رکھنے والے سمندر پار پاکستانیوں سے مطالبہ کیا کہ وہ اپنے آبائی ملک کے مفادات کے خلاف کام نہ کریں اور اس کے وقار کو مجروح کرنے سے گریز کریں۔ انہوں نے کہا کہ سیاست کی خاطر اپنے ملک کو نقصان نہ پہنچائیں۔

پیپلز پارٹی کی رکن پارلیمنٹ محترمہ شازیہ ماری نے بھی کینیڈین رکن پارلیمنٹ کی پاکستان کے پارلیمانی اور جمہوری نظام اور عسکری ادارے کے خلاف بولنے کی شدید مذمت کی۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان ایک جمہوری، خودمختار اور ایٹمی ریاست ہے۔ انہوں نے عمران خان سے کہا کہ اگر کوئی جماعت قومی اسمبلی میں اکثریت کھوتی ہے تو اسے اپوزیشن بنچوں پر بیٹھنا چاہیے۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں