23

شمالی وزیرستان میں پولیو ٹیم پر حملہ، تین افراد جاں بحق، ایک زخمی

پشاور: شمالی وزیرستان میں منگل کو پولیو ٹیم پر حملے میں دو پولیس اہلکاروں سمیت تین افراد ہلاک اور ایک شخص زخمی ہو گیا، پولیس حکام نے تصدیق کی۔ تحصیل دتہ خیل کے نواحی علاقے تنگ کلی میں نامعلوم حملہ آوروں نے فائرنگ کر کے دو پولیس اہلکاروں اور ایک پولیو ورکر کو قتل کر دیا جب کہ ایک شہری زخمی ہو گیا۔

جاں بحق ہونے والے کانسٹیبل رضا اللہ تحصیل دتہ خیل کے علاقے دری واستہ کے رہائشی کانسٹیبل دین شہید تحصیل کانی روضہ منظر خیل تحصیل دتہ خیل کے رہائشی اور پولیو ورکر رشید اللہ جو کہ تحصیل تنگ کلی، دتہ خیل کا رہائشی ہے۔

سینئر پولیس افسر اشفاق انور نے کہا، “مسلح افراد موٹر سائیکل پر آئے اور انہوں نے ویکسینیشن ٹیم پر فائرنگ کی۔” انہوں نے مزید کہا کہ آوارہ گولیوں سے ایک بچہ بھی زخمی ہوا۔ “متاثرین کی جائے وقوعہ پر موت ہو گئی اور مسلح افراد فرار ہو گئے۔”

ضلع کے ایک سینئر سرکاری اہلکار شاہد علی خان نے واقعے کی تصدیق کی ہے۔ 2012 سے اب تک متعدد پولیو ورکرز اور ان کی حفاظت کرنے والے سکیورٹی اہلکار عسکریت پسندوں کے حملوں میں مارے جا چکے ہیں۔

پولیس اور سیکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے کر ملزمان کی گرفتاری کے لیے تفتیش شروع کردی۔ پاکستان نے پیر کے روز اپنی تازہ ترین ویکسینیشن مہم کا آغاز کیا، جس کا مقصد 12.6 ملین سے زائد بچوں کو ٹیکہ لگانا ہے۔ اپریل میں، پاکستان میں 15 مہینوں میں کمزور کرنے والی نیوروڈیجنریٹو بیماری کا پہلا کیس رپورٹ ہوا۔ اس کے بعد سے اب تک پولیو کے 11 کیسز رپورٹ ہوئے ہیں۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں