17

شارٹ فال 7000 میگاواٹ سے تجاوز کرنے پر بجلی کا بحران شدت اختیار کر گیا۔

شارٹ فال 7000 میگاواٹ سے تجاوز کرنے پر بجلی کا بحران شدت اختیار کر گیا۔  تصویر: دی نیوز/فائل
شارٹ فال 7000 میگاواٹ سے تجاوز کرنے پر بجلی کا بحران شدت اختیار کر گیا۔ تصویر: دی نیوز/فائل

لاہور: پاکستان میں بجلی کا بحران شدت اختیار کر گیا کیونکہ بدھ کو بجلی کا شارٹ فال 7000 میگاواٹ (میگاواٹ) تک پہنچ گیا۔

ملک کو 10 سے 15 گھنٹے کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کا سامنا ہے کیونکہ بجلی کا شارٹ فال 7 ہزار میگاواٹ تک پہنچ گیا ہے۔ پاور ڈویژن کے ذرائع کے مطابق بجلی کی طلب 22 ہزار میگاواٹ کے مقابلے میں 29 ہزار میگاواٹ تک پہنچ گئی۔ ان کا کہنا تھا کہ بعض شہری مراکز اور دیہی علاقوں میں 12 سے 14 گھنٹے کی لوڈشیڈنگ کی جارہی ہے۔ لوڈشیڈنگ نے عوام کی مشکلات میں اضافہ کر دیا ہے جس سے روزمرہ کے کام کرنے میں مشکلات کا سامنا ہے۔

ادھر لاہور، کراچی، پشاور سمیت مختلف شہروں میں بجلی کی لوڈشیڈنگ کے خلاف احتجاجی مظاہرے ہوئے۔ کراچی میں بجلی کی طویل لوڈشیڈنگ نے امن و امان کی صورتحال پیدا کرنا شروع کر دی ہے، بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ سے مشتعل شہری سڑکوں پر نکل آئے اور شہر کے مختلف علاقوں میں احتجاج کیا۔ بجلی کی بدترین بندش کا سامنا کرنے والے کئی علاقوں میں لیاری، ہجرت کالونی، سلطان آباد، ناظم آباد، گلستان جوہر اور دیگر علاقے شامل ہیں۔

صدر کے تاجروں نے بجلی کی طویل بندش پر کے الیکٹرک کے خلاف احتجاج کیا۔ مشتعل مظاہرین نے ان کے بجلی کے بل جلا دیئے۔ اس موقع پر کراچی کے تاجروں نے کہا کہ بجلی کے بھاری بل ادا کرنے کے باوجود انہیں بجلی کی طویل بندش کا سامنا ہے جس سے ان کے کاروبار کو نقصان پہنچا ہے۔

پیر کو وزیر اعظم شہباز شریف نے بین الاقوامی مارکیٹ میں تیل اور گیس کی بڑھتی ہوئی قیمتوں کا حوالہ دیتے ہوئے جولائی کے مہینے میں مزید لوڈشیڈنگ کا عندیہ دیا تھا۔ وہ اسلام آباد میں اتحادی جماعتوں کے قانون سازوں سے خطاب کر رہے تھے۔

پشاور کے دیہی علاقوں میں بجلی کی بندش کا دورانیہ 14 گھنٹے تک پہنچ گیا۔ جبکہ شہری علاقوں میں لوڈشیڈنگ کا دورانیہ 18 گھنٹے تک جا پہنچا ہے۔ پیسکو کے ترجمان نے بتایا کہ گرم موسم کے باعث متعدد فیڈر ٹرپ کر گئے۔ انہوں نے کہا کہ پیسکو کو 590 میگاواٹ کا کوٹہ مل رہا ہے جبکہ شہر کو 880 میگاواٹ کی جبری لوڈشیڈنگ کا سامنا ہے۔ فیصل آباد میں بجلی کا شارٹ فال 1100 میگاواٹ سے تجاوز کر گیا جس کے باعث شہر کو غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

منگل کو لوڈشیڈنگ کے باعث لاہور کے مکینوں نے مختلف علاقوں میں احتجاج کیا۔ بجلی کی بندش سے جن علاقوں کو متاثر کیا گیا ان میں دھرم پورہ، جوہر ٹاؤن، غازی آباد، اقبال ٹاؤن، مصطفی آباد، رستم پارک، نوان کوٹ، سمن آباد، صدر، ہربنس پورہ، امیر ٹاؤن اور ملحقہ علاقے شامل ہیں۔ غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کے خلاف مشتعل شہریوں نے ہمدرد چوک پر احتجاجی مظاہرہ کیا اور ٹائر جلا کر سڑکیں بلاک کر دیں۔ مظاہرین نے لاہور الیکٹرک سپلائی کمپنی (لیسکو) کے خلاف شدید نعرے بازی بھی کی۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں