24

شہباز، زرداری، بلاول اتحاد کے معاملات پر دماغی طوفان

پاکستان پیپلز پارٹی پارلیمنٹیرینز کے صدر آصف علی زرداری اور پیپلز پارٹی کے چیئرمین اور وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری نے 30 جون 2022 کو اسلام آباد میں وزیر اعظم شہباز شریف سے ملاقات کی۔ فوٹو: اے پی پی
پاکستان پیپلز پارٹی پارلیمنٹیرینز کے صدر آصف علی زرداری اور پیپلز پارٹی کے چیئرمین اور وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری نے 30 جون 2022 کو اسلام آباد میں وزیر اعظم شہباز شریف سے ملاقات کی۔ فوٹو: اے پی پی

اسلام آباد: پاکستان پیپلز پارٹی پارلیمنٹیرینز (پی پی پی پی) کے صدر آصف علی زرداری اور پی پی پی کے چیئرمین و وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری نے جمعرات کو وزیراعظم شہباز شریف سے ظہرانے پر ملاقات کی۔ انہوں نے باہمی مشاورت سے فیصلے کرنے اور حکومت کی اتحادی جماعتوں کے تحفظات دور کرنے کا اعادہ کیا۔

وزیر اعظم نے جمعرات کو آصف علی زرداری اور بلاول بھٹو زرداری کے لیے ظہرانے کا اہتمام کیا جس میں وزیر اعظم شہباز شریف کی سیاسی ٹیم نے شرکت کی جس میں وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ، وزیر اقتصادی امور سردار ایاز صادق، وزیر ریلوے اور ایوی ایشن خواجہ سرا بھی شامل تھے۔ سعد رفیق اور پی ایم ایل این کے رہنما ملک احمد خان۔ تاہم ملاقات میں پیپلز پارٹی کی جانب سے صرف زرداری اور بلاول بھٹو ہی موجود تھے۔

ملاقات میں ملک کی سیاسی صورتحال، لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے کے بعد پنجاب میں پیدا ہونے والی صورتحال، حکومت کے اتحادیوں کے تحفظات اور تحفظات سے متعلق امور اور قومی احتساب بیورو (نیب) کے چیئرمین کی تقرری کے معاملے پر مشاورت کی گئی۔ اس کے علاوہ سندھ میں بلدیاتی انتخابات پر ایم کیو ایم اور جے یو آئی ایف جیسی اتحادی جماعتوں کے تحفظات زیر بحث آئے۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں