13

وزیر اعظم نے آئی ٹی اور ڈیجیٹل معیشت پر مشاورتی ادارہ کا نام دیا۔

اسلام آباد: وزیراعظم کے سیکرٹریٹ سے جاری ایک ہینڈ آؤٹ میں کہا گیا ہے کہ وزیراعظم شہباز شریف نے ملک میں ڈیجیٹل اقتصادی سرگرمیوں کو بڑھانے کے لیے آئی ٹی اور ڈیجیٹل اکانومی پر مشاورتی کونسل تشکیل دے دی ہے۔ کونسل حکومت کو مشورہ دے گی کہ ترقی کے کلیدی شعبوں، ان کے چیلنجز اور ان چیلنجوں پر قابو پانے کے لیے آگے بڑھنے کے راستے کی نشاندہی کرکے پاکستان کی ڈیجیٹل معیشت کو کیسے بڑھایا جائے۔

یہ اگلے 2 سے 3 سالوں میں IT اور IT سے چلنے والی خدمات کی برآمدات کو 15 بلین ڈالر تک بڑھانے کے اقدامات بھی تجویز کرے گا، فورم سرکاری اور نجی شعبوں میں صلاحیت کے فرق کی نشاندہی کرے گا اور ان خلا کو پر کرنے کے لیے اقدامات تجویز کرے گا۔

وزیراعظم شہباز شریف ایڈوائزری کونسل کے چیئرمین ہوں گے اور اس کے ممبران میں وفاقی وزیر آئی ٹی، وفاقی وزیر خزانہ، ایم این اے ڈاکٹر ملک مختار احمد، چیئرمین ایف بی آر، اسٹیٹ بینک کے گورنر، ایم او آئی ٹی اینڈ ٹیلی کام سیکرٹری، پاکستان سافٹ ویئر ایکسپورٹ بورڈ کے سیکرٹری/منیجنگ ڈائریکٹر شامل ہیں۔ وزیر اعظم کے اسٹریٹجک ریفارمز کے سربراہ سلمان صوفی، سی ای او سائبر نیٹ دانش لاکھانی، سی ای او جاز عامر ابراہیم، پی ایس ایچ اے کے چیئرمین بدر خوشنود، سی ای او اے زیڈ کریٹرز محمد زوہیب خان، سی ای او کیٹالسٹ جہاں آرا، سی ای او/ ایم ڈی کیور بلال حشمت، سی ای او ایم ڈی کیور بلال حشمت۔ آصف پیر، سی ای او انفو ٹیک (پرائیویٹ) لمیٹڈ نصیر اختر، سی ای او ایس اینڈ پی مجیب ظہور، نیٹسول ٹیکنالوجی کے چیئرمین سلیم غوری، گروپ سی ای او ٹی پی ایس شہزاد شاہد، سی ای او اینبلرز ثاقب اظہر، کنٹینٹ رائٹر/ فری لانسر شارون شاہد، شعیب احمد صدیقی، سید عمر صدیقی اسماعیل شاہ، ایسوسی ایٹ پروفیسر بیوٹمز ڈاکٹر فیصل خان، ایم ڈی کے پی کے آئی ٹی بورڈ صاحبزادہ علی محمود، پاکستان فنٹیک نیٹ ورک کے چیئرمین ندیم حسین، بلوچستان کمیشن آن دی سٹیٹس آف ویمن کی چیئرپرسن ایف۔ اوزیہ شاہین، سی ای او/ڈائریکٹر ایوامپ اینڈ سانگا الیوم خان، مائیکروسافٹ پاکستان کے سابق کنٹری منیجر ندیم ملک اور ممبر بورڈ آف ایڈوائزرز کیٹیلسٹ لیبز فیضان علی صدیقی۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں