15

سخت فیصلے ملکی مفاد میں ہیں: وزیر پنجاب

پنجاب کے وزیر قانون ملک احمد خان 6 جولائی 2022 کو ملتان میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کر رہے ہیں۔ تصویر: ٹوئٹر ویڈیو کا اسکرین گریب
پنجاب کے وزیر قانون ملک احمد خان 6 جولائی 2022 کو ملتان میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کر رہے ہیں۔ تصویر: ٹوئٹر ویڈیو کا اسکرین گریب

ملتان: پنجاب کے وزیر قانون ملک احمد خان نے کہا ہے کہ ن لیگ کو ریاست بچانے کی فکر ہے اور ملک کو ڈیفالٹ سے بچانے کے لیے کیے گئے سخت فیصلے ملکی مفاد میں ہیں۔

بدھ کو یہاں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر نے کہا کہ اینکر پرسن عمران ریاض نے اپنے یوٹیوب چینل پر اظہار رائے کی آزادی کے حق کا استحصال کرکے آئین کی خلاف ورزی کی۔ اس کی وجہ یہ تھی کہ ماضی میں یہی اینکر پرسن دوسرے صحافیوں کے خلاف کارروائیوں کو جواز بنا کر ان کے خلاف فتوے جاری کرتے رہے تھے، انہوں نے کہا کہ ملک اور ادارے بھی ان کے ہیں۔ “اداروں کے سربراہ بھی ہمارے ہیں، جائز تنقید ہونی چاہیے۔” انہوں نے کہا کہ اداروں پر حملے آئین اور قانون کی صریح خلاف ورزی ہیں، انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان کی خارجہ پالیسی، خودمختاری، سالمیت اور سلامتی کے خلاف اظہار رائے کی آزادی کو آئین کے آرٹیکل 19-A کے تحت سمجھا جانا چاہیے۔ پاکستان پینل کوڈ کی دفعہ 121 قانون کی خلاف ورزی پر لاگو ہوتی تھی۔

انہوں نے کہا کہ حکومت نے کسی عدالتی حکم کی خلاف ورزی نہیں کی۔ ‘جب عمران ریاض کو پنجاب حکومت کے دائرہ اختیار میں گرفتار کیا گیا تو اس حوالے سے لاہور ہائی کورٹ کا کوئی حکم موصول نہیں ہوا۔’ اگر انہیں لاہور ہائیکورٹ کا کوئی حکم ملا تو وہ اس کی پابندی کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ عمران ریاض اپنی آمدن کے ذرائع بتائیں اور انہوں نے لاہور میں بنگلہ کیسے خریدا۔ عمران ریاض بتائیں کہ انہوں نے ماہی گیری کے کروڑوں روپے کے ٹھیکے کیسے لیے۔ پیسہ کہاں سے آیا اور کس اکاونٹ میں جمع کیا گیا؟عمران ریاض بزدار حکومت کے ساتھ اپنے تعلقات کی وضاحت کریں۔

انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کے ارکان اب عمران ریاض کے معاملے پر واویلا کریں گے۔ پی ٹی آئی کے چیئرمین عمران خان اور سابق وزیر صحت یاسمین راشد نے بھی اداروں پر الزامات لگائے تھے اور پی ٹی آئی حکومت نے آزادی اظہار پر سب سے زیادہ پابندیاں لگائیں اور میڈیا کو خاموش کرایا۔ اب فواد چوہدری دھمکی دے رہے تھے کہ عمران ریاض کی گرفتاری پر پوری قوم سڑکوں پر آ جائے گی۔ اس کی وجہ یہ تھی کہ وہ ماضی میں کچھ صحافیوں کو غدار کہتے تھے اور اپنی برادری کے وفادار بھی نہیں تھے۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ پی ٹی آئی نے عوام کو مہنگائی اور بے روزگاری کا تحفہ دیا، انسانی حقوق کی خلاف ورزی کی اور پاکستان کو عالمی سطح پر تنہا کیا۔ انہوں نے کہا کہ فواد چوہدری نے غریبوں کو دی جانے والی 100 یونٹ بجلی کی رعایت کے خلاف سپریم کورٹ آف پاکستان کو خط بھیجا تھا۔ پنجاب بھر کے 50 لاکھ سے زائد غریب افراد اس رعایت سے مستفید ہوں گے اور اس کے لیے سالانہ بجٹ میں فنڈز کی منظوری دی گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ وہ اس مشکل وقت میں غریبوں کے حقوق کے تحفظ اور ان کی مشکلات کو دور کرنے کے لیے کام کر رہے ہیں۔ “آنے والے انتخابات کے حوالے سے، ہم ضابطہ اخلاق کی پاسداری کو یقینی بنا رہے ہیں۔ ہم تمام 20 حلقوں میں اس بات کو یقینی بنا رہے ہیں کہ ہتھیاروں کی نمائش یا استعمال نہ ہو۔”

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں