13

قائم مقام نیب چیف نے PAC کے مینڈیٹ کو IHC میں چیلنج کر دیا۔

قومی احتساب بیورو کے قائم مقام چیئرمین ظاہر شاہ۔  فائل فوٹو
قومی احتساب بیورو کے قائم مقام چیئرمین ظاہر شاہ۔ فائل فوٹو

اسلام آباد: قومی احتساب بیورو کے قائم مقام چیئرمین ظاہر شاہ نے منگل کو پبلک اکاؤنٹس کمیٹی (پی اے سی) کے مینڈیٹ کو اسلام آباد ہائی کورٹ (آئی ایچ سی) میں چیلنج کردیا۔

درخواست گزار نے وزارت پارلیمانی امور، قومی اسمبلی کے اسپیکر، پی اے سی کے چیئرمین اور دیگر کے ذریعے وفاق کو درخواست میں فریق بنایا، جس میں کہا گیا ہے کہ پی اے سی کی جانب سے ہراساں کرنے کے الزامات پر جاری کردہ نوٹس اس کے دائرہ اختیار سے باہر تھا۔

اسلام آباد ہائی کورٹ کے قائم مقام چیف جسٹس عامر فاروق آج (بدھ) رجسٹرار کے اعتراضات کے ساتھ درخواست کی سماعت کریں گے۔

درخواست میں کہا گیا ہے کہ پی اے سی کے چیئرمین کے خلاف بیورو میں انکوائری چل رہی تھی اور انہوں نے علاقائی ڈائریکٹر جنرل کو نوٹس جاری کیے تھے، انہوں نے مزید کہا کہ یہ اقدام مفادات کے ٹکراؤ کا معاملہ ہے۔ چیئرمین پی اے سی کو نیب کے معاملات سے متعلق اجلاسوں کی صدارت نہیں کرنی چاہیے۔

نیب کے سربراہ نے اپنی درخواست میں کہا کہ پی اے سی نے 24 جون کو اپنی کارروائی میں اپنے مینڈیٹ سے تجاوز کیا۔ انہوں نے عدالت سے استدعا کی کہ پی اے سی کی جانب سے 24 جون کو جاری کیے گئے سمن کو کالعدم قرار دیا جائے اور پارلیمانی باڈی کو کسی بھی کارروائی سے روکا جائے۔

دریں اثناء طیبہ گل نے پی اے سی کی جانب سے انہیں ہراساں کرنے کے معاملے میں جاری کیے گئے سمن نوٹس کے خلاف لاہور کے ڈی جی نیب کی جانب سے دائر کیس میں اپنا فریق بنانے کے لیے آئی ایچ سی میں درخواست دائر کی۔ عدالت نے پہلے ہی اٹارنی جنرل آف پاکستان (اے جی پی) سے نیب کے ڈی جی کی درخواست کو برقرار رکھنے میں مدد طلب کی تھی۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں