7

آئی ایس پی آر کا کہنا ہے کہ شہدا کے اہل خانہ کو دکھ پہنچا، درجات اور فائل ناراض

ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار۔  - اے پی پی/فائل
ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار۔ – اے پی پی/فائل

راولپنڈی: انٹر سروسز پبلک ریلیشنز (آئی ایس پی آر) نے جمعہ کو پاک فوج کے ہیلی کاپٹر کے المناک حادثے پر سوشل میڈیا مہم کی مذمت کی ہے، جس میں 6 فوجی اہلکار شہید ہوئے تھے۔

ہیلی کاپٹر رواں ہفتے پیر کو لاپتہ ہو گیا تھا جب یہ کوئٹہ سے کراچی جا رہا تھا۔ ہیلی کاپٹر میں موجود اہلکار ملک کے جنوب مغربی علاقوں میں سیلاب کی امدادی سرگرمیوں کی نگرانی کر رہے تھے۔

فوج کے میڈیا ونگ نے ایک بیان میں کہا، “یکم اگست کو ہونے والے بدقسمت ہیلی کاپٹر کے حادثے کے بعد افسوسناک سوشل میڈیا مہم نے شہدا کے خاندانوں اور مسلح افواج کے عہدے اور فائل کے درمیان گہرے غم اور پریشانی کا باعث بنی ہے۔”

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ “جب کہ پوری قوم اس مشکل وقت میں ادارے کے ساتھ کھڑی ہے، وہیں کچھ غیر حساس حلقوں نے سوشل میڈیا پر توہین آمیز اور توہین آمیز تبصروں کا سہارا لیا، جو ناقابل قبول اور انتہائی قابل مذمت ہے۔”

آئی ایس پی آر کے سربراہ میجر جنرل بابر افتخار نے کہا کہ ہم یکم اگست کو ہونے والے حادثے کے بعد سے پریشان ہیں۔ اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ ایسا نہیں ہونا چاہیے، جنرل بابر نے کہا کہ منفی پروپیگنڈہ اور افواہیں پھیلانے والے عناصر کو مسترد کیا جانا چاہیے۔

دریں اثناء جیو نیوز نے اطلاع دی ہے کہ صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی بلوچستان ہیلی کاپٹر حادثے میں شہید ہونے والوں کی نماز جنازہ میں شرکت کرنا چاہتے تھے تاہم پی ٹی آئی کے ٹرولز کے غلط اور منفی پروپیگنڈے کی وجہ سے انہیں ایسا نہ کرنے کا مشورہ دیا گیا۔ ذرائع کے مطابق صدر نے خواہش ظاہر کی تھی کہ سپریم کمانڈر اور سربراہ مملکت کی حیثیت سے وہ شہداء کے جنازے میں شرکت کرنا چاہتے ہیں تاہم انہیں بتایا گیا کہ پی ٹی آئی کے ٹرولوں نے شہداء کے بارے میں زہریلا، جھوٹا اور منفی پروپیگنڈا شروع کر دیا ہے۔ جس نے عوام کو مشتعل کردیا ہے۔ اس لیے صدر علوی کو مشورہ دیا گیا کہ وہ کسی بھی ناخوشگوار واقعے سے بچنے کے لیے شہداء کی نماز جنازہ میں شرکت نہ کریں تو بہتر ہوگا۔ مشورے پر عمل کرتے ہوئے صدر نے نماز جنازہ میں شرکت نہیں کی۔

بلوچستان میں ہیلی کاپٹر حادثے میں پاک فوج کے 6 جوان شہید ہوگئے۔ بدقسمت ہیلی کاپٹر کا ملبہ موسیٰ گوٹھ، وندر، لسبیلہ سے مل گیا۔ ہیلی کاپٹر خراب موسم کے باعث رات گئے گر کر تباہ ہوا۔

جاں بحق ہونے والوں میں لیفٹیننٹ جنرل سرفراز علی، کور کمانڈر بلوچستان، ایک میجر جنرل اور ایک بریگیڈیئر شامل ہیں۔ حکام نے بتایا کہ جنرل سرفراز اور ان کی ٹیم صوبائی دارالحکومت کوئٹہ سے تقریباً 500 کلومیٹر جنوب میں لسبیلہ ضلع میں سیلاب سے متعلق امدادی کارروائیوں کی نگرانی کر رہے تھے جب ان کے ہیلی کاپٹر کا ایئر ٹریفک کنٹرول سے رابطہ منقطع ہو گیا۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں