27

شادی کی پیشکش سے انکار پر میڈیکل کی طالبہ پر تشدد

فیصل آباد: مقامی عدالت نے ماہم کے مبینہ شوہر سے شادی سے انکار پر بی ڈی ایس فائنل ایئر کی طالبہ خدیجہ کو تشدد کا نشانہ بنانے کے الزام میں چھ ملزمان میں سے ایک ماہم کو جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا۔ ملزمان نے مقتولہ کو جوتے چاٹ کر اس کے بال کاٹے اور بھنویں مونڈ دیں۔ شیخ دانش سمیت دیگر 5 ملزمان کو دو روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کی تحویل میں دے دیا گیا ہے۔

پولیس نے شیخ دانش کے قبضے سے منشیات اور اسلحہ برآمد ہونے کے بعد اس کے خلاف ایک اور مقدمہ درج کر لیا ہے۔ دانش کو بدھ کو جڑانوالہ کے جوڈیشل مجسٹریٹ کے روبرو اسلحہ اور منشیات برآمدگی کیس میں پیش کیا گیا اور 50 ہزار روپے کے مچلکوں کے عوض ضمانت منظور کر لی گئی۔

پولیس کے مطابق خدیجہ کی میڈیکو لیگل رپورٹ میں تشدد ثابت ہو گیا ہے۔ سٹی پولیس آفیسر عمر سعید ملک نے کیس کی تحقیقات کے لیے کمیٹی تشکیل دے دی ہے۔ کمیٹی میں ایس ایس پی انویسٹی گیشن محمد اجمل، ایس پی محمد نبیل اور ڈی ایس پی قاضی فاروق شامل ہیں۔ یہ تفتیشی افسر سب انسپکٹر فرح بتول کی نگرانی کرے گی۔

اس کے علاوہ خدیجہ پر تشدد اور تذلیل کی ویڈیو وائرل ہونے کے بعد ایف آئی اے سائبر کرائم ونگ نے بھی تفتیش شروع کردی اور ملزمان کے زیر استعمال موبائل فون قبضے میں لے لیے ہیں۔

واضح رہے کہ خدیجہ کو صنعتکار شیخ دانش اور ان کے ساتھیوں نے جنسی طور پر ہراساں اور تشدد کا نشانہ بنایا تھا۔ شیخ دانش اور ان کی مبینہ اہلیہ ماہم سمیت چھ ملزمان کو منگل کو گرفتار کیا گیا تھا۔

شیخ دانش کی بیٹی شیخ انا علی کو تاحال گرفتار نہیں کیا گیا۔ انا خدیجہ کی دوست ہے۔ متاثرہ لڑکی کا کہنا تھا کہ اس کے دوست کا والد جو کہ ایک فیکٹری کا مالک تھا، اسے اس سے شادی کرنے پر مجبور کر رہا تھا لیکن جب اس نے انکار کیا تو اس کے ساتھ بدسلوکی کی گئی، ہراساں کیا گیا اور فلم بنائی گئی۔ اس نے کہا کہ اس کے دوست نے بھی اسے اس تجویز کو قبول کرنے کی ترغیب دی۔

دریں اثناء وزیر اعلیٰ پنجاب چوہدری پرویز الٰہی نے فیصل آباد میں میڈیکل کی طالبہ کو ہراساں کرنے اور تشدد کیس کا نوٹس لیتے ہوئے انسپکٹر جنرل (آئی جی) سے رپورٹ طلب کر لی۔

الٰہی نے پولیس چیف کو طالب علم کو ہراساں کرنے اور تشدد کرنے میں ملوث ملزمان کے خلاف سخت کارروائی کرنے کے احکامات جاری کیے۔ ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ ایسے واقعات کو برداشت نہیں کیا جا سکتا اور مجرم سخت سزا کے مستحق ہیں، انہوں نے اس عزم کا اظہار کیا کہ متاثرہ کو انصاف فراہم کیا جائے گا۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں