26

پی ٹی آئی کے ایک ایم این اے کی حد تک الیکشن کمیشن کا حکم معطل: IHC

پی ٹی آئی کے ایک ایم این اے کی حد تک الیکشن کمیشن کا حکم معطل: IHC

اسلام آباد: اسلام آباد ہائی کورٹ (آئی ایچ سی) نے پیر کو واضح کیا کہ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے 11 میں سے صرف ایک کا استعفیٰ معطل کیا گیا، باقیوں کا نہیں۔

آئی ایچ سی نے یہ مشاہدہ پی ٹی آئی کے ایم این اے عبدالشکور شاد کی درخواست کی سماعت کرتے ہوئے کیا جس میں ان کی قومی اسمبلی کی نشست سے استعفیٰ کی منظوری کو چیلنج کیا گیا تھا۔ سماعت آئی ایچ سی کے چیف جسٹس اطہر من اللہ کی سربراہی میں ہوئی۔

IHC نے وضاحت کی کہ الیکشن کمیشن آف پاکستان (ECP) کا نوٹیفکیشن صرف عبدالشکور شاد کی حد تک معطل کیا گیا تھا۔

چیف جسٹس نے درخواست گزار کے وکیل سے کہا کہ تمام اراکین کے لیے نوٹیفکیشن معطل نہیں کیا گیا۔ جواب میں شاد کے وکیل نے کہا کہ ای سی پی نے تمام 11 ارکان کو ایک ساتھ مطلع کر دیا ہے۔

تاہم، IHC کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے واضح کیا کہ نوٹیفکیشن صرف ایک رکن کی حد تک معطل کیا گیا تھا۔ عدالت نے کیس کی مزید سماعت ملتوی کر دی۔

اس سے قبل، الیکشن کمیشن آف پاکستان نے پیر کو این اے 157 ملتان-4 اور پنجاب اسمبلی کے تین ضمنی انتخابات کے لیے پولنگ کی تاریخ دوبارہ 9 اکتوبر مقرر کی تھی، امید ہے کہ اس وقت تک تمام قومی ادارے بشمول پولیس، پاک فوج، رینجرز اور ایف سی۔ انتخابی عمل کے دوران مدد کے لیے دستیاب ہوں گے۔

صوبائی اسمبلی کے جن تین حلقوں میں اب پولنگ 9 اکتوبر کو ہو گی وہ ہیں: PP-139 شیخوپورہ V، PP-241 بہاولنگر V اور PP-209 خانیوال۔ اس پیش رفت کے سلسلے میں، چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجہ نے ای سی پی کے اجلاس کی صدارت کی جس میں ای سی پی کے اراکین، سیکرٹری اور دیگر سینئر حکام نے شرکت کی۔ ای سی پی کے سیکرٹری نے حاضرین کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ 8 ستمبر کو 13 قومی اور صوبائی اسمبلی کے حلقوں پر ہونے والے ضمنی انتخابات سیلاب، ٹریفک کی صورتحال، نیشنل ایمرجنسی اور پولیس، پاک فوج، رینجرز اور قومی اداروں کی خدمات کی عدم دستیابی کے باعث ملتوی کیے گئے تھے۔ ایف سی ان خدمات کی عدم موجودگی اور سیلاب سے پیدا ہونے والی صورتحال کی وجہ سے پولنگ کے منظم انعقاد کو یقینی بنانا ممکن نہیں تھا۔ اس لیے انہوں نے کہا کہ پیر کا اجلاس ضمنی انتخابات کے ری فکس کے حوالے سے بلایا گیا ہے۔

واضح رہے کہ جن چار حلقوں کے لیے نئی تاریخ مقرر کی گئی ہے ان کے علاوہ قومی اسمبلی کے 9 حلقوں میں بھی پولنگ ملتوی کر دی گئی تھی۔ اس تناظر میں اسلام آباد ہائی کورٹ نے ای سی پی کا 29 جولائی 2022 کا نوٹیفکیشن معطل کر دیا ہے جس میں اراکین قومی اسمبلی کو ڈی نوٹیفائی کیا گیا تھا۔

تاہم ای سی پی کے سیکریٹری نے کہا کہ پیر کو الیکٹرانک میڈیا میں آنے والی خبروں کے مطابق معزز عدالت نے واضح کیا تھا کہ یہ فیصلہ صرف درخواست گزار پی ٹی آئی کے عبدالشکور شاد کی حد تک لاگو ہوگا۔ سی ای سی نے سیکرٹری کو ہدایت کی کہ اسلام آباد ہائی کورٹ سے وضاحت کی کاپی حاصل کی جائے تاکہ کمیشن ان نو حلقوں میں ضمنی انتخابات کی تاریخوں پر غور کر سکے۔

عبدالشکور شاد نے حال ہی میں اپنے ایم این اے کے استعفیٰ کی منظوری کو اسلام آباد ہائی کورٹ میں چیلنج کیا ہے۔ اس حوالے سے کمیشن نے 14 ستمبر کو دوبارہ اجلاس بلانے کا فیصلہ کیا ہے۔علاوہ ازیں سندھ حکومت سے صوبے میں بلدیاتی انتخابات کے دوسرے مرحلے کے حوالے سے رپورٹ طلب کر لی گئی ہے اور بلوچستان کے الیکشن کمشنر سے بھی رپورٹ طلب کر لی گئی ہے۔ بلوچستان کے اضلاع دکی، لورالائی، موسیٰ خیل اور مستونگ کے بعض پولنگ اسٹیشنز پر پولنگ کے سلسلے میں ایک ہفتے کے اندر اندر جو سیلاب کے باعث ملتوی ہوئے تھے۔ رپورٹ طلب کی گئی ہے کہ پولنگ کا عمل جلد از جلد کیسے منعقد ہو سکتا ہے۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں