31

صدر 3 اکتوبر کو پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کریں گے۔

اسلام آباد: قومی اسمبلی کے اسپیکر راجہ پرویز اشرف نے کہا ہے کہ پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے صدارتی خطاب کے لیے تمام پارلیمانی رہنماؤں سے مشاورت کے بعد 3 اکتوبر کی تجویز دی گئی ہے۔

انہوں نے پارلیمنٹ سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ اس سے قبل 19 ستمبر کی تجویز دی گئی تھی لیکن سیلاب کی تباہ کاریوں اور امدادی سرگرمیوں کے لیے اراکین پارلیمنٹ کی اپنے حلقوں میں موجودگی کے باعث یہ تجویز کیا گیا کہ صدر 3 اکتوبر کو پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کریں۔ رپورٹرز ایسوسی ایشن نے جمعرات کو یہاں پارلیمنٹ ہاؤس میں…

انہوں نے جعلی خبروں اور غیر تصدیق شدہ بیانیے کے خلاف پارلیمنٹ کے دفاع کے لیے صحافیوں سے تعاون طلب کرتے ہوئے کہا کہ اگر کوئی جعلی خبروں اور غیر تصدیق شدہ بیانیے کے ذریعے پارلیمنٹ کی توہین کرتا ہے تو میڈیا کی ذمہ داری ہے کہ وہ اس مقدس ادارے کو بدنام کرنے کی ایسی کوششوں کی حوصلہ شکنی کرے۔

پی ٹی آئی ارکان کے استعفوں کے حوالے سے پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ان استعفوں کی کہانی عجیب ہے اور انہوں نے قانون کے مطابق ان استعفوں کی تصدیق کرنے کی پوری کوشش کی لیکن نہیں ہو سکے۔ انہوں نے کہا، ’’کچھ ارکان نے مجھے بتایا کہ انہوں نے دباؤ میں استعفیٰ دیا ہے،‘‘ انہوں نے مزید کہا کہ اسلام آباد ہائی کورٹ نے استعفوں کا فیصلہ ان پر چھوڑ دیا ہے۔

یہ پوچھے جانے پر کہ کیا پی ٹی آئی کے ارکان تنخواہیں وصول کر رہے ہیں تو انہوں نے کہا کہ انہیں تنخواہیں نہیں مل رہی ہیں جبکہ ان میں سے کچھ سرکاری گاڑیاں استعمال کر رہے ہیں جو واپس لے لی گئی ہیں لیکن پارلیمنٹ لاجز اب بھی استعمال کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مجھے ان سے لاجز خالی کروانے کو کہا گیا لیکن ایک جمہوریت پسند ہونے کے ناطے میں نے انہیں وہاں سے جانے پر مجبور نہیں کیا کیونکہ ہم جمہوری لوگ ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پارلیمنٹ کی کارروائی کی رپورٹنگ کرنے والے صحافیوں کی ذمہ داری ہے کہ وہ تصدیق شدہ خبریں پہنچائیں کیونکہ صرف سچی خبریں ہی پارلیمنٹ پر عوام کا اعتماد برقرار رکھے گی۔ انہوں نے کہا کہ صحافیوں پر پابند ہے کہ وہ جب بھی پارلیمانی اصولوں کے خلاف کوئی چیز دیکھیں تو حکومت کی رہنمائی کریں۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں