23

پشین بارڈر مارکیٹ اکتوبر میں کھلے گی۔

اسلام آباد: وزیر تجارت سید نوید قمر نے جمعرات کو کہا کہ پاکستان ایران پشین بارڈر مارکیٹ آنے والے مہینے میں کھلنے کی امید ہے جس سے دونوں ممالک کے درمیان آزاد تجارت میں اضافہ ہوگا۔

نوید نے وزارت میں ایک ایرانی پارلیمانی وفد کے ساتھ ملاقات میں کہا کہ مارکیٹ مکمل ہو چکی ہے اور اس کا افتتاح تاش پر ہے، جبکہ دیگر تین بازاروں بشمول گبد، رمدان اور کوہاک پر کام جلد شروع ہو جائے گا۔ وفد کی قیادت ملک فاضلی نے کی اور اس میں مجید ناصری نژاد اور ڈاکٹر محسن فتحی شامل تھے۔

وزیر نے کہا کہ تجارت کے حجم کو بڑھانے کے لیے دونوں طرف سے کل 12 بارڈر مارکیٹوں کی تجویز دی گئی تھی، جن میں سے نو کو باہمی طور پر منظور کر لیا گیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ بارٹر سسٹم کے تحت ان سرحدی منڈیوں کے ذریعے تجارت ہوگی۔

وزیر نے کہا کہ پیٹرولیم اور گیس میں تجارت کے حجم کو بڑھانے کی اشد ضرورت ہے۔ ہم ایران سے لیکویفائیڈ پیٹرولیم گیس (ایل پی جی) درآمد کر رہے ہیں اور اس کی درآمد کو بھی بڑھانے کی ضرورت ہے۔ پاکستان میں اس کی پیداوار بڑھانے کی بھی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم گوادر کے لیے ایران سے بجلی درآمد کرتے ہیں اور اس میں بھی اضافہ کرنے کی ضرورت ہے۔ جب وفد نے فارماسیوٹیکل سیکٹر میں باہمی تعاون اور تجارت میں اضافے کی تجویز پیش کی تو وزیر نے کہا کہ پاکستان فارماسیوٹیکل سیکٹر میں درآمدات بھی کر رہا ہے اور برآمدات بھی جاری ہیں۔ انہوں نے یہ تجویز بھی دی کہ اگلے تجارتی وفد میں فارماسیوٹیکل سیکٹر سے تعلق رکھنے والے افراد کو شامل کیا جائے۔

اس موقع پر ایرانی پارلیمانی وفد کے سربراہ ملک فضلی نے کہا کہ پاکستان اور ایران کے درمیان 920 کلومیٹر کی مشترکہ سرحد کے ساتھ پڑوسی ممالک ہیں جہاں سے باہمی تجارت بھی ہوتی ہے اور لوگوں کی آمدورفت سال بھر جاری رہتی ہے۔ انہوں نے خواہش ظاہر کی کہ باہمی تجارت کے حجم میں اضافہ ہو، ایران نے پیاز اور ٹماٹر کی قلت پر قابو پانے کے لیے پاکستان کے ساتھ تعاون کیا۔

انہوں نے کہا کہ ایرانی پارلیمنٹ کے رکن کی حیثیت سے وہ توانائی کے شعبے میں پاکستان اور ایران کے درمیان تعاون کو ضروری سمجھتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ایران پاکستان گیس پائپ لائن پر کام بھی مستقبل قریب میں مکمل ہونا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان سیلاب اور قدرتی آفات بالخصوص سندھ اور بلوچستان کی وجہ سے مشکل صورتحال سے دوچار ہے۔ اس سلسلے میں حکومت ایران سیلاب متاثرین کی بحالی کے لیے پاکستان کے ساتھ مکمل تعاون کرے گی۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں