12

قوم ‘امپورٹڈ’ حکومت کے پیچھے غداروں کو نہیں بھولے گی، عمران

چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان چکوال میں جلسے سے خطاب کر رہے ہیں۔—اسکرین گریب
چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان چکوال میں جلسے سے خطاب کر رہے ہیں۔—اسکرین گریب

چکوال: پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین اور سابق وزیراعظم عمران خان پیر کو قوم ان غداروں کو نہیں بھولے گی جنہوں نے امپورٹڈ حکومت کو اقتدار میں لایا۔

یہاں ایک جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے عمران نے نوجوانوں سے کہا کہ وہ خوف کے بت توڑ دیں اور نامعلوم نمبروں سے فون پر خوفزدہ کرنے والوں کو ڈرا دیں۔ انہوں نے کہا کہ نوجوانوں کو خوفزدہ کرنے والوں کی کوئی قیمت نہیں ہے، انہوں نے مزید کہا کہ ملک کی قیادت کے لیے اپنے نمائندوں کو منتخب کرنے کا فیصلہ عوام کے ساتھ منصفانہ اور شفاف طریقے سے ہے اور کوئی نہیں۔

پی ایم ایل این کی نائب صدر مریم نواز پر تنقید کرتے ہوئے عمران نے کہا کہ مریم نے بغیر پچھتاوے کے جھوٹ بولا اور انہوں نے اپنی زندگی میں ایسا شخص نہیں دیکھا۔ وزیر اعظم شہباز شریف کے دورہ امریکہ پر تبصرہ کرتے ہوئے عمران نے کہا کہ وہ کوئی غیر معمولی کام نہیں کریں گے۔ سابق وزیراعظم نے دعویٰ کیا کہ شنگھائی تعاون تنظیم کے سربراہی اجلاس کے موقع پر سمرقند میں روسی صدر ولادی میر پیوٹن سے ملاقات کے دوران شہباز شریف کی ٹانگیں کانپ رہی تھیں۔

نئے آرمی چیف کی تقرری سے متعلق اپنے بیان پر بات کرتے ہوئے عمران نے کہا کہ آئی ایس پی آر کے ڈائریکٹر جنرل کو کم از کم یہ سمجھ لینا چاہیے تھا کہ وہ کیا پیغام دے رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جب میں کہتا ہوں کہ آرمی چیف کا انتخاب میرٹ پر ہونا چاہیے تو اس کا مطلب ہے کہ پاکستان پیپلز پارٹی اور پاکستان مسلم لیگ نواز کو انہیں منتخب نہیں کرنا چاہیے کیونکہ یہ سب سے کرپٹ لوگ ہیں اور میرٹ پر بھروسہ نہیں کرتے۔

یہ دونوں جماعتیں میرٹ پر یقین نہیں رکھتیں۔ لہٰذا اگر آپ ایک خوشحال پاکستان چاہتے ہیں، جس ملک کا خواب قائداعظم اور علامہ اقبال نے دیکھا تھا، تو آپ کو میرے پکارنے پر باہر آنا چاہیے۔‘‘ انہوں نے مزید کہا۔

انہوں نے لوگوں کو اپنے پیچھے نکلنے کو کہا اور کہا کہ کوفہ کے لوگ یزید سے ڈرتے ہیں اور حضرت عمران حسین رضی اللہ عنہ کی حمایت میں نہیں نکلے۔ انہوں نے کہا کہ اگر پیپلز پارٹی میرٹ پر یقین رکھتی تو زرداری کی بجائے اعتزاز احسن پارٹی سربراہ ہوتے، بلاول اور مریم نواز مسلم لیگ ن کے تمام بڑے فیصلے نہ لے رہی ہوتیں۔

عمران نے کہا کہ شہباز ملک کو ڈوب کر بیرون ملک چلا گیا۔ بلاول نے بھی اسی کی پیروی کی اور بیرون ملک چلے گئے، انہوں نے کہا کہ اگر یہ دورہ اتنا اہم تھا تو کم از کم انہیں مادر وطن کا احترام کرنا چاہیے تھا۔

عمران نے کہا کہ گیدڑ کی قیادت میں 100 شیروں کی فوج کو شکست ہونا یقینی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ‘امپورٹڈ’ حکمرانوں کو چاہیے کہ وہ بھیک کا کٹورا لے کر بیرون ملک جانے کے بجائے لوٹی ہوئی دولت واپس لائیں۔

عمران خان نے کہا کہ اگر زرداری، نواز شریف اور شہباز شریف لوٹی ہوئی قومی دولت کا آدھا حصہ بھی واپس کر دیں تو ملک کو عالمی برادری سے پیسے کی بھیک مانگنے کی ضرورت نہیں ہے۔ پی ٹی آئی کے سربراہ نے کہا کہ وہ چکوال کے نوجوانوں اور خواتین کو حقیقی تحریک آزادی میں شامل کریں گے۔

میں نے اب تک 8.5 گھنٹے ٹیلی تھون کے ذریعے سیلاب متاثرین کے لیے 14 ارب روپے اکٹھے کیے ہیں۔ لوگ یقینی طور پر عطیات دیں گے جب انہیں یقین ہو کہ ان کے فنڈز کا صحیح استعمال کیا جائے گا۔ میں یقین سے کہہ سکتا ہوں کہ دنیا میں پاکستانیوں سے زیادہ کھلے دل والے کوئی نہیں ہیں۔

مجھے خدشہ ہے کہ سندھ میں سیلاب کی وجہ سے گندم کی فصل بھی متاثر ہو سکتی ہے۔ سیلاب نے سندھ اور بلوچستان میں فصلیں تباہ کر دی ہیں اور وہاں متاثرین کو کافی مشکلات کا سامنا ہے،” عمران نے کہا۔

پی ٹی آئی کے سربراہ نے کہا کہ شہباز شریف جیسے نااہل حکمران قوم پر مسلط ہیں اور وہ قومی مفادات کو کبھی ترجیح نہیں دیں گے۔ عمران نے کہا کہ چکوال کے عوام چوروں کو شکست دینے کے لیے تیار رہیں۔ سابق وزیراعظم نے کہا کہ انہوں نے کبھی شکست قبول نہیں کی اور کرپٹ حکمرانوں کے خلاف جدوجہد سے کبھی پیچھے نہیں ہٹیں گے۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں