7

آڈیو لیک ہونے پر ایف آئی اے ٹیم نے ترین سے پوچھ گچھ کی۔

سابق وفاقی وزیر خزانہ شوکت ترین۔  - فائل فوٹو
سابق وفاقی وزیر خزانہ شوکت ترین۔ – فائل فوٹو

اسلام آباد: سابق وفاقی وزیر خزانہ شوکت ترین جمعرات کو آڈیو لیک کیس کی تحقیقات کرنے والی ایف آئی اے ٹیم کے سامنے پیش ہوگئے۔

ذرائع نے دی نیوز کو بتایا کہ ترین نے خیبرپختونخوا کے وزیر خزانہ تیمور جھگڑا کے ساتھ آڈیو لیک ہونے والی گفتگو سے انکار کیا۔ انہوں نے آڈیو کو “محفوظ نہیں” قرار دیا اور کہا کہ وہ تکنیکی سوالات کا جواب نہیں دیں گے۔

یہ پوچھے جانے پر کہ کیا وہ بین الاقوامی مالیاتی فنڈ (IMF) کے ساتھ معاہدے کے خلاف ہیں، ترین نے کہا: “نہیں، میں معاہدے کے خلاف نہیں ہوں۔ میں ایسے وقت میں آئی ایم ایف کو اضافی رقم دینے کے خلاف ہوں جب پاکستان بدترین سیلاب کا سامنا کر رہا ہے۔ جب ان سے پوچھا گیا کہ کیا انہوں نے کے پی حکومت کو آئی ایم ایف کے معاملات پر کوئی مشورہ دیا تو انہوں نے اس کی تصدیق کی۔

ترین کم از کم 45 منٹ تک تفتیشی ٹیم کے ساتھ رہے لیکن کوئی تسلی بخش جواب نہ دے سکے اور جزوی بیان ریکارڈ کرایا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ترین کو دوبارہ بلانے یا نہ کرنے کا فیصلہ انکوائری کمیٹی کرے گی۔

تحقیقاتی ٹیم میں ایف آئی اے کے ڈپٹی ڈائریکٹر محمد ایاز اور انکوائری آفیسر منیب ظفر شامل تھے جنہوں نے ترین کو 20 نکاتی سوالنامہ دیا۔ لیکن ترین نے واضح جواب دینے سے گریز کیا۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں