15

پنجاب حکومت کا جے آئی ٹی بنانے کا فیصلہ

لاہور: پنجاب کی قائمہ کمیٹی برائے امن و امان (ایس سی سی ایل او) نے بدھ کو وزیر آباد میں پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان پر ہونے والے حملے کی تحقیقات کے لیے مشترکہ تحقیقاتی ٹیم (جے آئی ٹی) بنانے کا فیصلہ کیا ہے۔

صوبائی وزیر پارلیمانی امور، تحفظ ماحولیات اور کوآپریٹو محمد بشارت راجہ نے راولپنڈی سے ویڈیو لنک کے ذریعے اجلاس کی صدارت کی۔ سول سیکرٹریٹ سے اجلاس میں وزیراعلیٰ کے مشیر داخلہ عمر سرفراز چیمہ، چیف سیکرٹری پنجاب عبداللہ خان سنبل اور دیگر حکام نے شرکت کی۔

کابینہ کی باڈی نے (آج) جمعرات سے شروع ہونے والے پی ٹی آئی کے لانگ مارچ کے اگلے مرحلے کے لیے سیکیورٹی انتظامات کا تفصیلی جائزہ لیا۔ ڈی آئی جی آپریشنز پنجاب نے پولیس کے تیار کردہ سیکیورٹی پلان پر بریفنگ دی۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ ایڈیشنل انسپکٹر جنرل ہائی وے پٹرول پنجاب ریاض نذیر گرہ جے آئی ٹی کی قیادت کریں گے جبکہ دیگر ممبران میں متعلقہ سیکیورٹی اداروں کے نمائندے شامل ہوں گے۔

کابینہ کمیٹی نے یہ بھی فیصلہ کیا کہ کنٹینر پر موجود پی ٹی آئی کے سینئر رہنماؤں کو وہی سیکیورٹی فراہم کی جائے گی جو سابق وزیراعظم عمران خان کے لیے مختص ہے۔ کمیٹی کے چیئرمین بشارت راجہ نے متعلقہ اضلاع کی پولیس اور ضلعی انتظامیہ کو ہدایت کی کہ وہ مستقبل میں کسی بھی ناخوشگوار واقعے سے بچنے کے لیے پی ٹی آئی قیادت سے رابطے میں رہیں۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ کنٹینر کے قریب گاڑیوں کی غیر ضروری موجودگی کو روکا جائے گا۔ راجہ نے کہا کہ وزیر آباد واقعے کے پیش نظر کنٹینر پر بلٹ پروف روسٹرم اور شیشہ نصب کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ روٹ کے قریب واقع عمارتوں پر سنائپرز کی تعیناتی اور دیگر حفاظتی انتظامات کو یقینی بنایا جائے۔

کمیٹی نے راولپنڈی سمیت دیگر علاقوں کی صورتحال کا جائزہ لیتے ہوئے فیصلہ کیا کہ موٹر ویز پر حائل رکاوٹیں جلد دور کی جائیں گی اور پی ٹی آئی قیادت سے درخواست کی جائے گی کہ ججز کی گاڑیوں کو راستہ دیا جائے۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں