16

سعودی ولی عہد کا دورہ پاکستان ملتوی

سعودی نائب ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان 2016 میں ریاض، سعودی عرب میں۔ اے ایف پی
سعودی نائب ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان 2016 میں ریاض، سعودی عرب میں۔ اے ایف پی

اسلام آباد: سعودی عرب کے ولی عہد اور وزیراعظم محمد بن سلمان (ایم بی ایس) بن عبدالعزیز آل سعود نے ہفتہ کو اپنا دورہ پاکستان ملتوی کردیا۔

دفتر خارجہ کی ترجمان ممتاز زہرہ بلوچ نے اس حوالے سے جاری کردہ ایک مختصر بیان میں تصدیق کی کہ دورہ ری شیڈول کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ نئی تاریخوں کو دونوں فریق باہمی طور پر طے کریں گے۔ ولی عہد کو وزیراعظم شہباز شریف نے ستمبر میں دونوں کے درمیان ٹیلی فونک گفتگو میں مدعو کیا تھا۔ رواں برس اپریل میں پاکستان میں حکومت کی تبدیلی کے بعد سعودی ولی عہد کا یہ پہلا دورہ پاکستان تھا۔

سفارتی ذرائع نے بتایا تھا کہ اسلام آباد کو سعودی ولی عہد کے دورے کے دوران ریاض سے 4.2 بلین ڈالر کا بیل آؤٹ پیکج ملنے کی امید تھی۔

سعودی رہنما کا غیر معمولی دورہ 21 نومبر کو ہونا تھا۔ مزید برآں، سعودی عرب سے پاکستان میں ٹھوس سرمایہ کاری کی بھی توقع تھی۔ ذرائع نے یہ بھی بتایا کہ ان کے دورہ پاکستان کے دوران پاکستان سعودی پٹرولیم کے متعدد معاہدوں کو حتمی شکل دی جا رہی ہے۔

حکومت ایک ممکنہ معاہدے پر بھی اعتماد کر رہی تھی جس کے تحت گوادر میں جدید ترین ریفائنری کے قیام کے لیے سعودی عرب سے مالی معاونت حاصل کرنے میں مدد ملے گی۔

ولی عہد نے آخری مرتبہ فروری 2019 میں سابق وزیراعظم عمران خان کے دور میں پاکستان کا دورہ کیا تھا۔

دریں اثنا، ہندوستانی میڈیا ذرائع کے مطابق، سعودی ولی عہد اور وزیر اعظم محمد بن سلمان نے دونوں اطراف کے “شیڈیولنگ مسائل” کی وجہ سے نئی دہلی کا منصوبہ بند دورہ منسوخ کر دیا۔ جب کہ اس دورے کا سرکاری طور پر اعلان نہیں کیا گیا تھا، یہ کئی ہفتوں سے منصوبہ بندی کے تحت تھا، جب وزیر خارجہ ایس جے شنکر نے ستمبر میں وزیر اعظم نریندر مودی کی طرف سے سعودی شہزادے کو مدعو کرتے ہوئے ایک خط پہنچایا تھا۔

مقامی میڈیا کے مطابق ایم بی ایس نے اپنا دورہ جنوبی کوریا بھی ملتوی کردیا اور اس حوالے سے نئی تاریخ کا جلد اعلان متوقع ہے۔

دریں اثناء وزیراعظم کے نمائندہ خصوصی برائے بین المذاہب ہم آہنگی اور مشرق وسطیٰ حافظ محمد طاہر محمود اشرفی نے ہفتہ کو کہا کہ سعودی عرب کے وزیراعظم اور ولی عہد محمد بن سلمان نے ذاتی مصروفیات کے باعث دورہ پاکستان ملتوی کیا ہے۔

اشرفی، جو پاکستان علماء کونسل کے چیئرمین بھی ہیں، نے کہا کہ اطلاعات کے مطابق ولی عہد نے نہ صرف اپنا دورہ پاکستان ملتوی کیا بلکہ بعض دیگر ممالک کے دورے میں بھی تاخیر کی۔

انہوں نے مزید کہا کہ جیسے ہی ان کا دورہ ری شیڈول ہوگا، اس سے متعلقہ حلقوں کو آگاہ کر دیا جائے گا۔ انہوں نے یہ بھی واضح کیا کہ ولی عہد کے دورہ ملتوی ہونے سے پاکستان کے اندرونی معاملات کا کوئی تعلق نہیں ہے۔

انہوں نے لوگوں پر بھی زور دیا کہ “منفی عناصر کی طرف سے پھیلائی جانے والی افواہوں سے گمراہ نہ ہوں۔” انہوں نے کہا کہ ولی عہد نہ صرف سرکاری مہمان تھے بلکہ پاکستانی قوم کی سب سے پیاری شخصیت تھے، انہوں نے اس امید کا اظہار بھی کیا کہ ان کی وطن آمد پر ان کا تاریخی استقبال کیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ پاک سعودی تعلقات نہ صرف سفارتکاری پر مبنی ہیں بلکہ یہ عقیدے اور یقین پر بھی قائم ہیں جنہیں کسی پروپیگنڈے اور سازش سے متزلزل نہیں کیا جا سکتا۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں