24

سرحد پار سے حملے میں ایف سی اہلکار شہید چمن کراسنگ بند کر دی گئی۔

گاڑی پر سوار ایف سی اہلکار علاقے میں گشت کر رہے ہیں۔  — اے ایف پی/فائل
گاڑی پر سوار ایف سی اہلکار علاقے میں گشت کر رہے ہیں۔ — اے ایف پی/فائل

کوئٹہ: چمن بارڈر پر افغان جانب سے فائرنگ سے فرنٹیئر کور کا ایک اہلکار شہید اور دو زخمی ہوگئے۔

فائرنگ کے واقعے کے بعد اسپن بولدک چمن کراسنگ پر طالبان فورسز اور پاکستانی فوج کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ ہوا جس کے نتیجے میں راہگیروں میں افراتفری مچ گئی۔

ہر ملک کے حکام کے مطابق یہ جھڑپ اتوار کی صبح ہوئی اور اس کے نتیجے میں سرحدی گزرگاہ بند ہو گئی۔ کراسنگ کے ذریعے روزانہ ہزاروں لوگ سفر کرتے ہیں، جو اسے ایک اہم تجارتی مقام بناتا ہے۔

بعد ازاں دونوں ممالک کے حکام کے درمیان فلیگ میٹنگ ہوئی اور اعلان کیا گیا کہ جب تک فائرنگ کے مجرموں کو پاکستان کے حوالے نہیں کیا جاتا کراسنگ بند رہے گی۔ افغان حکام کا کہنا ہے کہ حملہ آور طالبان کے بھیس میں تھا اور اس نے ایک آپریشن کیا ہے۔ اس کی تلاش کے لیے شروع کیا گیا۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں