12

پریڈ گراؤنڈ میں عمران کے کاپٹر کے اترنے پر جی ایچ کیو کو کوئی اعتراض نہیں۔

پریڈ گراؤنڈ میں عمران کے کاپٹر کے اترنے پر جی ایچ کیو کو کوئی اعتراض نہیں۔  ٹویٹر
پریڈ گراؤنڈ میں عمران کے کاپٹر کے اترنے پر جی ایچ کیو کو کوئی اعتراض نہیں۔ ٹویٹر

اسلام آباد: جنرل ہیڈ کوارٹرز (جی ایچ کیو) نے جمعرات کو پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کو باضابطہ طور پر مطلع کیا ہے کہ اسے پارٹی کے 26 نومبر کو راولپنڈی میں ہونے والے جلسے کے سلسلے میں پریڈ گراؤنڈ میں عمران خان کے ہیلی کاپٹر کی لینڈنگ پر کوئی اعتراض نہیں ہے۔

خط میں عسکری قیادت نے تحریک انصاف کو تجویز دی کہ وہ اسلام آباد انتظامیہ سے اجازت لے کیونکہ پریڈ گراؤنڈ اس کے دائرہ اختیار میں آتا ہے۔

ادھر پی ٹی آئی رہنما علی نواز اعوان نے پریڈ گراؤنڈ میں عمران کے ہیلی کاپٹر کی لینڈنگ اور روانگی کے لیے وفاقی حکومت سے منظوری مانگ لی۔

وفاقی حکومت کے الرٹ کا حوالہ دیتے ہوئے پی ٹی آئی رہنما نے کہا کہ عمران خان کی جان کو خطرہ ہے اور پارٹی کے 26 نومبر کے جلسے میں ان کی محفوظ شرکت کو یقینی بنانے کے لیے ہیلی کاپٹر کا استعمال ضروری ہے۔

انہوں نے کہا کہ جی ایچ کیو کی این او سی کے بعد پریڈ گراؤنڈ میں عمران خان کے ہیلی کاپٹر کی لینڈنگ میں رکاوٹیں کھڑی کرنے کا کوئی جواز نہیں۔

دریں اثناء وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ نے کہا کہ انہیں پی ٹی آئی چیئرمین عمران کے ہیلی کاپٹر کی پریڈ گراؤنڈ میں لینڈنگ سے کوئی مسئلہ نہیں اگر سیکیورٹی اداروں کو کوئی اعتراض نہیں ہے۔

جیو نیوز کے پروگرام کیپٹل ٹاک میں گفتگو کرتے ہوئے وزیر داخلہ نے کہا کہ انہوں نے اسلام آباد انتظامیہ کو ہدایت کی ہے کہ معاملے کا فیصلہ میرٹ پر کیا جائے۔

راولپنڈی میں پارٹی کے طویل دھرنے اور روڈ بلاک کرنے کے بارے میں سوال کے جواب میں ثناء اللہ نے پی ٹی آئی کو سڑکیں بلاک کرنے اور عام لوگوں کو کسی قسم کی تکلیف پہنچانے کے خلاف خبردار کیا۔

پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے ثناء اللہ نے لیفٹیننٹ جنرل ساحر شمشاد مرزا اور لیفٹیننٹ جنرل عاصم منیر کو بالترتیب جوائنٹ چیفس آف اسٹاف کمیٹی (CJCSC) اور چیف آف آرمی اسٹاف (COAS) کا اگلا چیئرمین مقرر ہونے پر مبارکباد دی۔

صدر عارف علوی اور پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان کے درمیان زمان پارک میں سابق وزیراعظم کی رہائش گاہ پر ہونے والی ملاقات کا حوالہ دیتے ہوئے ثناء اللہ نے کہا کہ سابق وزیراعظم نے عارف علوی اور ان کے عہدے کی ایک بار پھر تذلیل کی۔

آئینی سربراہ مملکت کو اگلے آرمی چیف کی منظوری سے قبل مشاورت کے لیے عمران خان سے ملاقات نہیں کرنی چاہیے تھی۔ انہوں نے مزید کہا کہ عمران خان نے اپنی جعلی انا کی تسکین کے لیے ایک بار پھر آئینی عہدے کی تذلیل کی۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ ضلعی انتظامیہ نے 26 نومبر 2022 کو پاکستان تحریک انصاف کی ریلی کو اسلام آباد کیپیٹل ٹیریٹری میں داخلے کی مشروط اجازت دے دی ہے، لیکن ہیلی کاپٹر کو پریڈ گراؤنڈ میں اتارنے کی درخواست کو مسترد کر دیا، ایک اعلیٰ پولیس اہلکار نے تصدیق کی جب رابطہ کیا

ضلعی انتظامیہ نے پی ٹی آئی کو ہدایت کی ہے کہ وہ اجازت کی تصدیق کے لیے 24 گھنٹے میں 13 نکاتی شرائط پوری کرے۔

نظم و نسق کے ذمہ دار لوگوں نے 26 نومبر 2022 کو وفاقی دارالحکومت میں پی ٹی آئی کے مشتعل کارکنوں کی طرف سے کسی بھی مشکل مسئلے کا مقابلہ کرنے کا منصوبہ بنایا ہے۔

اسلام آباد میں داخل ہونے والی تمام اہم شاہراہوں بشمول فیض آباد جوائننگ مری روڈ، نائنتھ ایونیو اور پشاور روڈ پر چونگی نمبر 26 کو مکمل طور پر کنٹینرائز کیا جائے گا تاکہ شہر میں امن برقرار رکھا جا سکے۔

ذرائع نے اس نمائندے کو بتایا کہ “پی ٹی آئی کے کسی گروپ کو فیصل ایونیو کے اختتام پر F/7 تک نشان زد ریڈ زون میں داخل ہونے کی اجازت نہیں ہوگی۔”

ذرائع نے بتایا کہ سیف سٹی کیمروں کے ذریعے امن و امان کی صورتحال پر نظر رکھی جائے گی جبکہ فورسز جائے وقوعہ سے دور رہیں گی لیکن صورتحال پر قابو پانے کے لیے شورش زدہ علاقوں کی طرف دوڑیں گی۔

انسپکٹر جنرل آف پولیس (آئی جی پی) اسلام آباد ڈاکٹر اکبر ناصر نے اس مصنف کے رابطہ کرنے پر رپورٹ کی تصدیق کی۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں