25

ایف بی آر نے دو افسران کو 120 دن کے لیے معطل کر دیا۔

اسلام آباد: فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) نے سابق آرمی چیف جنرل (ر) قمر جاوید باجوہ کے خاندان کے افراد کا ٹیکس ڈیٹا لیک کرنے میں مبینہ طور پر ملوث ہونے پر دو افسران کو 120 دن کے لیے معطل کردیا۔

جمعرات کو ایف بی آر کی جانب سے جاری کردہ نوٹیفکیشن کے مطابق ایف بی آر نے دو افسران ظہور احمد اور عاطف نواز وڑائچ کو معطل کر دیا۔

نوٹیفکیشن میں کہا گیا ہے کہ سول سرونٹس (ایفیسینسی اینڈ ڈسپل) رولز 2020 کے ذیلی قاعدہ (1) کے تحت عطا کردہ اختیارات کے استعمال میں، مجاز اتھارٹی یعنی سیکرٹری ریونیو/چیئرمین ایف بی آر نے بی ایس کے دو افسران کو تعینات کیا ہے۔ ان لینڈ ریونیو سروس کے 18 کو فوری طور پر 120 دنوں کے لیے معطل کر دیا گیا ہے۔ معطل کیے گئے افسران میں ظہور احمد، (ایڈمن پول)، ایف بی آر (ہیڈ کوارٹر)، اسلام آباد، اور عاطف نواز وڑائچ (ایڈمن پول)، ایف بی آر (ہیڈ کوارٹرز)، اسلام آباد شامل ہیں۔

وزیر خزانہ نے وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے ریونیو طارق پاشا کو تحقیقات کی ذمہ داری سونپی تھی تاکہ ان عناصر کا پتہ لگایا جا سکے جو ایف بی آر کے دائرہ کار میں ہیں اور سابق چیف آف آرمی سٹاف جنرل (ر) کے خاندان کے افراد کے ٹیکس گوشوارے لیک کرنے میں ان کا کردار ہے۔ قمر جاوید باجوہ۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں