27

اعتراض ٹھوس نہ ہونے پر آر او کاغذات نامزدگی مسترد نہ کرے، سپریم کورٹ

سپریم کورٹ آف پاکستان کا رات کا منظر۔  دی نیوز/فائل
سپریم کورٹ آف پاکستان کا رات کا منظر۔ دی نیوز/فائل

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے ریٹرننگ افسران (آر اوز) کو غلطی سے اثاثے ظاہر نہ کرنے والے امیدواروں کے کاغذات نامزدگی مسترد کرنے سے روک دیا۔

عدالت عظمیٰ نے یہ احکامات ہفتہ کو سندھ میں بلدیاتی انتخابات میں کونسلر کی نشست کے امیدوار یاسر آفتاب کی جانب سے الیکشن کمیشن کے کاغذات نامزدگی مسترد کرنے کے فیصلے کے خلاف دائر درخواست پر محفوظ کیے گئے تفصیلی فیصلے کا اعلان کرتے ہوئے دیے۔

جسٹس منیب اختر نے 12 صفحات پر مشتمل تفصیلی فیصلہ تحریر کیا۔

سپریم کورٹ کے حکم میں کہا گیا ہے کہ ریٹرننگ افسر سندھ لوکل گورنمنٹ ایکٹ کے تحت کاغذات نامزدگی پر فیصلہ کرتے ہوئے خود کو مطمئن کرے اگر امیدوار کے کاغذات نامزدگی پر اعتراض ٹھوس نہ ہو تو آر او پر پابند ہے کہ وہ کاغذات نامزدگی مسترد نہ کرے۔ کاغذات

اگر امیدوار کے کاغذات نامزدگی پر اعتراضات ٹھوس ہیں تو آر او اعتراض کو درست کرنے کے بعد نظر انداز کر سکتا ہے۔ ان امیدواروں کے کاغذات نامزدگی مسترد کر دیے جائیں جنہوں نے غلطی سے اپنے اثاثے ظاہر نہیں کیے تو یہ انصاف نہیں ہو گا۔

تاہم، امیدوار کو دعویٰ کرنے کا کوئی حق نہیں ہے اور یہ آر او کا استحقاق ہے۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں