22

صدر اور وزیراعظم کی چمن میں افغان سرحدی فورسز کی فائرنگ کی مذمت

اسلام آباد: صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی اور وزیراعظم شہباز شریف نے اتوار کو چمن میں شہری آبادی کو نشانہ بناتے ہوئے افغان سرحدی فورسز کی بلااشتعال فائرنگ کی شدید مذمت کی ہے۔

فائرنگ سے کم از کم چھ پاکستانی شہید ہو گئے۔ پیر کو جاری ہونے والے الگ الگ بیانات میں مستقبل میں ایسے واقعات کے اعادہ کو روکنے کی ضرورت پر زور دیا۔ صدر نے امید ظاہر کی کہ افغان حکومت واقعے میں ملوث افراد کے خلاف سخت کارروائی کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ سرحد کے دونوں جانب رہنے والی شہری آبادی کا تحفظ دونوں ممالک کی ذمہ داری ہے۔ انہوں نے جانوں کے ضیاع پر تعزیت کا اظہار کیا اور زخمیوں کی جلد صحت یابی اور متاثرہ خاندانوں سے ہمدردی کا اظہار کیا۔ وزیر اعظم شہباز شریف نے پیر کو ایک ٹویٹ میں کہا کہ افغان عبوری حکومت اس بات کو یقینی بنائے کہ ایسے واقعات دوبارہ نہ ہوں۔ چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی نے بھی چمن پر افغان سرحدی فورسز کی بلا اشتعال فائرنگ کی مذمت کی۔ ایک ٹویٹ میں انہوں نے واقعے میں قیمتی جانوں کے ضیاع پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا۔ انہوں نے افغان حکام پر زور دیا کہ وہ مستقبل میں ایسے واقعات کی روک تھام کو یقینی بنائیں کیونکہ سرحد کے دونوں جانب رہنے والے شہریوں کی حفاظت دونوں ممالک کی ذمہ داری ہے۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں